The news is by your side.

Advertisement

بھارتی الیکشن، ووٹ خریدنے کیلئے رکھی گئی 1 کروڑ روپے سے زائد کی رقم برآمد

نئی دہلی : بھارت کے عام انتخابات میں الیکشن کمیشن کی نگرانی ٹیم اور محکمہ انکم ٹیکس کے تامل ناڈو کے ایک حلقے میں مشترکہ چھاپے میں ایک دکان سے ووٹرز میں تقسیم کےلئے رکھے گئے ایک کروڑ 48 لاکھ بھارتی روپے برآمد کرلیے۔

تفصیلات کے مطابق ان دنوں بھارت میں لوک سبھا کے الیکشن جاری ہیں جس میں کامیابی کےلیے انتخابات میں حصّہ لینے والی سیاسی جماعتیں مختلف ہتھکنڈے اپنا رہی ہیں، بھارتی ریاست تامل ناڈو میں لوک سبھا کے حلقے تھینی میں واقع ایک دکان سے تقریباً ڈیڑھ کروڑ روپے برآمد کیے ہیں جو ووٹرز میں تقسیم کرنے تھے۔

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ مذکورہ دکان کو مبینہ طور پر تامل ناڈو کی ایک سیاسی جماعت (اے ایم ایم کے) کا ہمدرد چلاتا تھا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق چھاپے کے دوران اس کارروائی پر اعتراض کرنے والے سیاسی جماعت کے ہمدردوں کو منتشر کرنے کےلئے اہلکاروں کو ہوائی فائر بھی کرنے پڑی۔

سینئر عہدیدار نے بتایا کہ فائرنگ سے کوئی زخمی نہیں ہوا اور سیاسی جماعت کے 4 کارکنان کو اس سے تعلق کے شبے میں گرفتار بھی کیا گیا، ٹیم نے عمارت میں نقد رقم چھپائے جانے کی اطلاع پر چھاپہ مارا تاہم دکان کا مالک موقع سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا۔

حکام کے مطابق قبضے میں لی گئی نقد رقوم کے پیکٹس پر ووٹرز کے نام، وارڈ نمبر درج تھے اور ہر پیکٹ پر 3 سو بھارتی روپے لکھا گیا تھا۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ اس سے قبل الیکشن کمیشن نے غیر قانونی رقم کے ذریعے ووٹرز کو لالچ دینے کے الزام پر ویلور کے پارلیمانی حلقے میں بھی انتخابات ملتوی کردیے تھے۔

مزید پڑھیں : بھارت میں انتخابات کے دوسرے مرحلے میں ووٹنگ جاری

یاد رہے کہ بھارت میں لوک سبھا کے انتخابات کے لیے پولنگ کے دوسرے مرحلے میں (آج) ووٹنگ کا عمل جاری ہے، ملک کی 13 ریاستوں کی 97 نشستوں پر عوام اپنے ووٹ کا حق استعمال کررہے ہیں۔ انتخابات میں 90 کروڑ ووٹر حق رائے دہی استعمال کررہے ہیں، یہ تعداد امریکا اور یورپی یونین کی مجموعی آبادی سے بھی زیادہ ہے۔

خیال رہے کہ بھارت میں لوک سبھا کی 543 نشستوں کے لیے مرحلہ وار انتخابات کا انعقاد کیا جارہا ہے، اب تک ایک مرحلہ ہوا جس میں دورانِ ووٹنگ پرتشدد واقعات میں 4 افراد ہلاک جبکہ متعدد زخمی ہوئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں