The news is by your side.

کان میں معمولی درد کے علاج کے لیے آنے والی خاتون کا بازو کاٹ دیا گیا

نئی دہلی: بھارتی شہر پٹنہ میں اسپتال کے عملے کی مجرمانہ غفلت کی وجہ سے کان میں معمولی درد کے علاج کے لیے آنے والی نوجوان خاتون کا بازو کاٹنا پڑا، اہل خانہ نے انصاف کے لیے عدالت سے رجوع کرلیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق طبی مجرمانہ غفلت کا واقعہ ریاست بہار کے شہر پٹنہ میں پیش آیا۔

لڑکی کے اہل خانہ کا کہنا تھا کہ ان کی بہن ریکھا کے کان میں تکلیف تھی جس کی ایک معمولی سرجری ہونی تھی، اس کے لیے وہ مہاویر ہیلتھ انسٹی ٹیوٹ گئیں، وہاں ایک نرس نے ڈاکٹر کا تجویز کردہ انجکشن دیا۔

اہل خانہ کے مطابق انجکشن کے بعد ریکھا کو بائیں ہاتھ میں تکلیف ہونے لگی، ہاتھ کا رنگ سبز ہونے لگا اور ہاتھ بھی ٹھیک سے کام نہیں کر رہا تھا۔ اس کے بعد انہوں نے وہاں کی نرسوں اور ڈاکٹروں سے اس کی شکایت کی لیکن کسی نے نہیں سنی۔

کافی دیر بعد ڈاکٹرز نے دیکھا تو کہا کہ ٹھیک ہو جائے گا، لیکن انجکشن لگنے کے بعد سے ہی ریکھا تکلیف کا شکار تھی۔

بعد ازاں وہ ایک پرائیوٹ اسپتال میں دکھانے گئے جہاں ڈاکٹروں نے بتایا کہ ہاتھ کاٹنا پڑے گا۔ مذکورہ خاندان مریضہ کو لے کر مختلف اسپتالوں میں گھومتا رہا لیکن کہیں سے اس کا علاج نہ ہوسکا،جس کے بعد بالآخر انہیں آپریشن کے ذریعے ہاتھ کٹوانا ہی پڑا۔

اہل خانہ کا کہنا ہے کہ ان کی بچی کی یہ حالت مہاویر ہیلتھ انسٹی ٹیوٹ کی وجہ سے ہوئی ہے، انہوں نے انصاف کے لیے عدالت کا رخ کیا ہے اور انسٹی ٹیوٹ کو بند کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں