نہال ہاشمی کی دھمکی آمیز تقریر کیس کی سماعت، پیمرا کا متن نامکمل قرار -
The news is by your side.

Advertisement

نہال ہاشمی کی دھمکی آمیز تقریر کیس کی سماعت، پیمرا کا متن نامکمل قرار

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے مسلم لیگ ن کے سابق سینیٹر نہال ہاشمی کی دھمکی آمیز تقریر کے مقدمے میں پیمرا کا متن نا مکمل قرار دے دیا۔ عدالت نے کہا کہ اے آر وائی نیوز پر نشر ہونے والا متن کیوں نہیں دیا گیا۔ توہین آمیز کی جگہ ڈاٹ ڈاٹ کیوں لکھا، وضاحت یہاں کریں گے یا اڈیالہ جیل میں۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن کے سابق سینیٹر نہال ہاشمی کی دھمکی آمیز تقریر سے متعلق کیس کی سماعت سپریم کورٹ میں ہوئی۔ سماعت کے آغاز پر نہال ہاشمی نے بیماری کے باعث عدالت سے مزید وقت مانگا جسے عدالت نے مسترد کردیا۔

سماعت میں ڈی جی پیمرا سپریم کورٹ میں بطور گواہ پیش ہوئے اور نہال ہاشمی کے بیان کے 3 ٹرانسکرپٹ اور تقریر نشر کرنے والے چینلز کی فہرست پیش کی۔

عدالت نے پیمرا کا متن نامکمل قرار دیتے ہوئے کہا کہ جو متن لگایا اس میں توہین آمیز مواد ہے ہی نہیں، متن میں توہین آمیز کی جگہ ڈاٹ ڈاٹ کیوں لگا ہے؟ ڈی جی پیمرا وضاحت یہاں کریں گے یا اڈیالہ جیل میں؟

مزید پڑھیں: نہال ہاشمی پر فرد جرم عائد

عدالت نے پوچھا کہ اے آر وائی نیوز کا جو کلپ عدالت میں چلایا وہ متن میں کیوں نہیں دیا گیا۔ اگر نشر کیا گیا حصہ متن سے زیادہ نکلا تو اٹارنی جنرل اور گواہ دونوں کو نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا۔

بعد ازاں نہال ہاشمی کی تقریر کا اے آر وائی نیوز پر چلنے والا کلپ کمرہ عدالت میں چلایا گیا۔ عدالت کا کہنا تھا کہ ڈی جی پیمرا کو ایس ای سی پی میں کیوں نہیں رکھا؟ ڈی جی پیمرا بھی اسی قسم کی حرکتیں کر رہے ہیں۔

نہال ہاشمی کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ عمران خان کی وجہ سے یہ سب کچھ ہوا، جس پر جسٹس اعجاز الاحسن نے دریافت کیا کہ عمران خان کا کیس سے کیا تعلق ہے؟ گویا آپ نے کچھ نہیں کیا چینلز نے خود ہی خبر بنا کر چلا دی۔

عدالت نے کہا کہ بادی النظر میں نہال ہاشمی نے توہین عدالت کی۔ تقریر میں تبدیلی کر کے چلائی گئی ہے تو نشاندہی کریں۔

یاد رہے کہ چند روز قبل لیگی رہنما نہال ہاشمی نے کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے جے آئی ٹی کو کھلے عام سنگین دھمکیاں دیتے ہوئے کہا تھا کہ ہم تمہارا یوم حساب بنا دیں گے۔

نہال ہاشمی کی متنازعہ تقریر کے بعد ان کی مسلم لیگ ن سے رکنیت بھی خارج کردی گئی تھی۔

چند روز قبل کراچی کی مقامی عدالت میں دائر اس تقریر کے خلاف مقدمے میں عدالت نے دہشت گردی کی دفعات شامل کرنے کی بھی ہدایت کردی تھی۔

اس سے قبل سپریم کورٹ نہال ہاشمی پر فرد جرم بھی عائد کرچکی ہے۔


Comments

comments

یہ بھی پڑھیں