The news is by your side.

Advertisement

نیتن یاھو کی کرپشن اور رشوت خوری کی نئی تفصیلات جاری

یروشلم : اسرائیلی وزیر اعظم کی کرپشن کی مزید تفصیلات کے عیاں ہوگئی، رپورٹ میں 1000 کیس میں نیتن یاھو پر 9 کروڑ شیکل کے غیر قانونی فواید حاصل کرنے کا الزام کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو کی کرپشن سے متعلق کیس1000میں ان پر بدعنوانی میںملوث ہونے کی نئی تفصیلات سامنے آگئیں۔

مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق 1000 کیس میں نیتن یاھو پر 9 کروڑ شیکل کے غیرقانونی فواید حاصل کرنے کا الزام ہے۔ اس کیس میں وزیراعظم نیتن یاھو میںان کی اہلیہ سارہ نیتن یاھو بھی ملوث ہیں۔

اس کے علاوہ ان کے سابق معاون ارب پتی ارنون ملیچمین، ھداس کلائن، اربن پتی جیمز باکر کو بھی ملوث کیا گیا ہے، نیتن یاھو اور ان کی اہلیہ ان شخصیات سے رشوت کے طورپر بیش قیمت صحائف وصول کرتے رہے ہیں۔

نیتن یاھو نے ھداس کلائن کے سامنے اپنی بیوی اور خاتون اول کے مطالبات خود پیش کیے تھے۔ سارہ نیتن یاھو نے رات کے ایک بجے بات چیت کی۔ اسی رات سابق اسرائیلی صدر شمعون پیریز انتقال کرگئے تھے۔

رپورٹ کے مطابق کلائن نے سارہ نیتن یاھو کےساتھ ہونےوالی بات چیت کے بارے میں عدالت میں گواہی دی۔ دونوں کے درمیان بات چیت 2016ءمیں فوجیوں کے قتل کی یاد میں منائی جا رہی تھی۔

خیال رہے کہ صہیونی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو اور ان اہلیہ سابق حکومت کےدور میں رشوت وصول کرنے اور اپنے من پسند افراد کو ٹھیکے دینے سمیت کئی دوسرے الزامات کاسامنا کررہے ہیں۔ ان کےخلاف عدالت میں یہ کیسز 1000، 3000 اور 4000 کے عنوان سے جاری ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں