The news is by your side.

Advertisement

اے ڈی خواجہ کو ہٹانے کیلئے سندھ کابینہ سے منظوری لینے کا فیصلہ

کراچی : سندھ حکومت نے آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کو ہٹانے کیلئے کابینہ سے منظوری لینے کا فیصلہ کرلیا، موجودہ آئی جی کو گریڈ22کے افسر سے تبدیل کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق گھی سیدھی انگلی سے نہ نکلے تو انگلی ٹیڑھی کرنی پڑتی ہے، شاید اسی لئے سندھ حکومت نے بھی انگلی ٹیڑھی کرلی۔

آئی جی سندھ اللہ ڈنوخواجہ اور سندھ حکومت میں اب بھی بنتی دکھائی نہیں دے رہی، اےڈی خواجہ کو عہدے سے ہٹانے کے لیے پولیس قوانین میں تبدیلی پر غور شروع کردیا۔

حکومت سندھ نے اے ڈی خواجہ کو ہٹانے کا نیا طریقہ سوچ لیا، سندھ ہائی کورٹ سے آئی جی کے حق میں فیصلہ آنے کے بعد سندھ پولیس اور حکومت میں ٹھنی ہوئی ہے۔

اس حوالے سے وزیراعلیٰ مراد علی شاہ نے کابینہ کا اجلاس 28اکتوبر کو وزیراعلیٰ ہاؤس میں طلب کیاہے، ایجنڈے کے مطابق موجودہ آئی جی پولیس کی تبدیلی کی کابینہ ارکان سے منظوری لی جائے گی موجودہ آئی جی پولیس کو گریڈ22کے افسر سے تبدیل کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ اے ڈی خواجہ اکیسویں گریڈ کے افسر ہیں، ترمیم کے بعد عہدے کے لیے بائیسواں گریڈ لازمی ہوگا، سندھ میں بائیسویں گریڈ کا آئی جی بھیجنے کے لیے وفاق سےرابطےکا فیصلہ کیا گیا ہے۔


مزید پڑھیں: سندھ ہائیکورٹ کا آئی جی کوعہدے پربرقرار رکھنےکا حکم


سندھ میں اب تک سترہ میں سے چودہ آئی جیزکا اکیسواں گریڈ تھا، ذرائع کے مطابق ہائیکورٹ نےآئی جی کی تبدیلی کے لئے مستند قانونی جوازمانگا ہے۔


مزید پڑھیں: حکومت کا آئی جی سندھ کیس کےفیصلےکوچیلنج کرنے کا فیصلہ


بائیسویں گریڈ کے آئی جی کے فیصلے کے بعد عدالت میں جواب جمع کرایا جائیگا۔ اس سے قبل بھی سندھ حکومت کی جانب سے موجودہ آئی جی پولیس کو تبدیل کرنے کے لیے کابینہ سے منظوری لی گئی تھی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں