The news is by your side.

Advertisement

کرائسٹ چرچ میں دہشت گردی کا منصوبہ ناکام

کرائسٹ چرچ: نیوزی لینڈ میں سیکیورٹی فورسز نے اہم کارروائی کرتے ہوئے دہشت گردی کا منصوبہ ناکام بنا دیا، بم برآمد کرلیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق کرائسٹ چرچ کے علاقے فلپس ٹاؤن میں سیکیوٹی فورسز نے کارروائی کرتے ہوئے بم برآمد کرلیا، اس دوران ایک مشتبہ شخص کو بھی گرفتار کیا گیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ پولیس 33 سالہ گرفتار شخص سے دھماکا خیز مواد کے بارے میں پوچھ گچھ کررہی ہے، جلد حقائق منظر عام پر آئیں گے۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ بم ڈسپوزل اسکواڈ نے موقع پر پہنچ کر دھماکا خیز مواد کو ناکارہ بنایا، کئی گھنٹوں تک پولیس نے علاقے کو گھیرے میں لیے رکھا۔

نیوزی لینڈ میں مساجد پر دہشت گرد حملوں کے بعد ملک بھر میں سیکیوٹی ہائی الرٹ ہے، جبکہ اس سے قبل کئی آپریشن بھی کیے جاچکے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ معاملے کے حقائق تک پہنچنے کی کوشش کررہے ہیں، بم کی موجودگی کس طرح عمل میں آئی اور گرفتار شخص کی شناخت بھی جلد منظر عام پر آئے گی۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ کرائسٹ چرچ کی دو مساجد میں نماز جمعہ کے وقت سفید فام انتہا پسند شخص کی فائرنگ سے 50 نمازی شہید اور 39 زخمی ہوگئے تھے۔ گرفتار 28 سالہ آسٹریلوی حملہ آور برینٹن ٹیرینٹ پر فرد جرم عائد کردی گئی ہے۔

برطانوی شہزادے ولیم کا کرائسٹ چرچ کی النور مسجد کا دورہ، شہداء کو خراج عقید ت پیش

پولیس نے چوبیس گھنٹے کے اندر مرکزی حملہ آور کو گرفتار کرلیا تھا جس کی شناخت 28 سالہ برینٹن ٹیرنٹ کے نام سے ہوئی تھی، حملہ آور آسٹریلوی شہری تھا جس کی آسٹریلیا نے بھی تصدیق کردی تھی۔

سفید فام دہشت گرد پر عدالت نے گزشتہ دنوں فردِ جرم عائد کی اور اُس کے دماغی معائنے کا بھی حکم دیا۔ کرائسٹ چرچ میں مساجد پر حملہ کرنے والے دہشت گرد کو 50 افراد کے قتل اور 39 کے اقدام قتل سمیت مجموعی طور پر 89 الزامات کا سامنا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں