The news is by your side.

Advertisement

بلوچستان اسمبلی میں اپوزیشن جماعتوں کے ارکان کی نیوز کانفرنس، مشیر تعلیم کی برطرفی کا مطالبہ

کوئٹہ: بلوچستان کی اپوزیشن جماعتوں نے وزیر اعلیٰ جام کمال سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ مشیر تعلیم کو فوری بر طرف کر دیں۔

تفصیلات کے مطابق بلوچستان اسمبلی میں اپوزیشن جماعتوں کے ارکان نے نیوز کانفرنس کی، اپوزیشن لیڈر ملک سکندر خان نے کہا کہ ہم نے محکمہ تعلیم میں بھرتیوں میں بے ضابطگیوں پر آواز اٹھائی ہے، سب سے زیادہ نا انصافی بلوچستان میں ہو رہی ہے۔

صوبائی اسمبلی میں اپوزیشن رہنما ملک سکندر کا کہنا تھا کہ وزیر اعلیٰ جام کمال کو محکمہ تعلیم میں تعیناتیاں کالعدم قرار دینی چاہیے تھیں۔

بی این پی کے پارلیمانی لیڈر ملک نصیر شاہوانی نے کہا صوبے میں ہر 2 ماہ بعد سیکریٹری تبدیل ہوتے ہیں، ایسی صورت حال میں شفافیت کیسے ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں:  بلوچستان اسمبلی: مبینہ غیر قانونی بھرتیوں کیخلاف اپوزیشن کا علامتی واک آوٹ

بلوچستان نیشنل پارٹی کے رہنما ثنا اللہ بلوچ نے کہا کہ بلوچستان میں بے روزگاری کی وجہ سے نوجوان مایوس ہیں، صوبے میں اپوزیشن کو دیوار سے لگا دیا گیا ہے، بلوچستان کی سیاسی ساخت کو بھی نقصان پہنچایا گیا۔

پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے رہنما نصراللہ زیرے نے کہا کہ محکمہ تعلیم میں 3 خواتین کو چوکیدار بھرتی کیا گیا ہے، خواتین رات کے وقت کیسے چوکیداری کر سکتی ہیں، وزیر اعلیٰ مشیر تعلیم کو فوری بر طرف کریں۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز محکمہ تعلیم اور محکمہ صحت میں مبینہ غیر قانونی بھرتیوں پر کمیٹی نہ بنانے پر بلوچستان اسمبلی میں اپوزیشن اراکین نے علامتی واک آوٹ کیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں