The news is by your side.

پاکستان میں چھونے، کھانسنے اور چھینکنے سے لگنے والے خطرناک مرض کے پھیلنے کا خدشہ

اسلام آباد : قومی ادارہ صحت نے حلق کی بیماری کے پھیلاؤ کے خدشے کے پیش نظر انتباہی مراسلہ جاری کردیا۔

تفصیلات کے مطابق قومی ادارہ صحت نے ملک میں حلق کی بیماری کے پھیلاؤ کا خدشہ ظاہر کر دیا۔

قومی ادارہ صحت نے صوبوں کے نام خناق کے حوالے سے انتباہی مراسلہ جاری کردیا ہے ، جس میں کہا ہے کہ بیکٹیریا سے لاحق ہونے والی بیماری خناق جان لیوا ہے، ملک میں خناق کیسز نومبر تا فروری میں سامنے آتے ہیں۔

مراسلے میں کہا گیا کہ 2022 کے دوران ملک میں خناق کے 26 کیس سامنے آئے تھے، محکمہ صحت، متعلقہ حکام خناق بارے پیشگی اقدامات کریں۔

قومی ادارہ صحت نے کہا کہ متعلقہ ادارے خناق کا پھیلاؤ روکنے کیلئے مشتبہ کیسز کو مانیٹر کریں، اخناق ایک انسان سے دوسرے کو لاحق ہونے والا مرض ہے، خناق کا جرثومہ مریض کو چھونے، کھانسنے اور چھینکنے سے پھیلتا ہے۔

مراسلے کے مطابق مریض کے کپڑے اور دیگر اشیااستعمال کرنے سے خناق پھیلتا ہے، خناق کا انکیوبیشن پیریڈ دو تا پانچ دن یا زیادہ ہو سکتاہے تاہم پی سی آر ٹیسٹ سے خناق کی تصدیق ممکن ہے۔

قومی ادارہ صحت کا کہنا تھا کہ خناق کا شکار افراد کو فوری طور پر آئیسولیٹ کیا جائے، پاکستان میں بچوں کو انسداد خناق ویکسین کی تین ڈوز دی جاتی ہے، 12 سالہ بچوں کو خناق کی بوسٹر ڈوز لگائی جاتی ہے۔

قومی ادارہ صحت نے بتایا کہ خناق کے مشتبہ سیمپل کا ٹیسٹ مفت کر رہا ہے، خناق سے بچاو کیلئے عوامی شعور بیداری کی ضرورت ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں