The news is by your side.

Advertisement

نیپا چورنگی جعلی پولیس مقابلے کے ملزمان کا ریمانڈ منظور

کراچی : نیپا چورنگی میں مبینہ جعلی پولیس مقابلے میں طالب علم کی ہلاکت کے کیس میں ملوث پولیس اہلکار نبیل اور ظفر کو 15 روزہ ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا گیا ہے۔

انسداد دہشت گردی کی عدالت نے مبینہ جعلی پولیس مقابلے میں نوجوان طالب علم محمد عتیق کو قتل کرنے والے دونوں ملزمان کو مزید تفتیش کے لیے 15 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا ہے۔

اسی سے متعلق : پولیس مقابلے میں جاں بحق طالب علم کے قتل کا مقدمہ درج

تفصیلات کے مطابق چند روز قبل نیپا چورنگی کے قریب پولیس مقابلے میں موٹر سائیکل سوارایک نوجوان جاں بحق اور دوسرا زخمی ہو گیا تھا،پولیس کا دعوی تھا کہ ہلاک اور زخمی ہونے والے ڈاکو تھے جو راہزنی میں ملوث تھے۔

تا ہم موقع پر موجود عینی شاہدین اور پھر ویڈیو کلپس کی منظر عام پر آنے کے بعد جعلی پولیس کا بھانڈا پھوٹ گیا تھا جس کا فوری نوٹس لیتے ہوئے وزیرا علی سندھ نے آئی جی کو فوری انکوائری کا حکم دیا تھا۔

یہ خبر پڑھیں : گلشن اقبال میبنہ جعلی پولیس مقابلہ، آئی جی سندھ کا نوٹس

جس کے بعد جعلی پولیس مقابلے میں ملوث دونوں پولیس اہلکاروں کو گرفتار کر کے تھانے منتقل کردیا تھا، جاں بحق ہونے والے نوجوان کے اہل خانہ نے تھانے میں ایف آئی آر درج کرانے کے موقع پردہشت گردی کی دفعات بھی لگانے کے لیے ذور دیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں : نیپا جعلی پولیس مقابلہ : فائرنگ کرنیوالا شخص پولیس قومی رضا کارنکلا

ذرائع کے مطابق گرفتار پولیس اہلکاروں میں سے ایک قومی رضاکار کا اہلکار ہے جنہیں نہ تو اسلحہ رکھنے کی اجازت ہوتی ہے اور نہ کسی چھاپہ مار کارروائی میں پولیس پارٹی کا حصہ ہوتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں