The news is by your side.

Advertisement

نوماہ کی کمسن نشوہ کی نمازجنازہ و تدفین، سیاسی رہنما بھی شریک، ہر آنکھ اشکبار

کراچی : غلط انجکشن لگنے سے جاں بحق ہونے والی نو ماہ کی کمسن نشوہ کو پہلوان گوٹھ قبرستان میں سپرد خاک کردیا گیا،نماز جنازہ میں سیاسی رہنماؤں سمیت بڑی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کے دارالصحت اسپتال میں غلط انجکشن لگنے کے باعث مفلوج ہوجانے اور کئی دن زندگی اور موت کی کشمکش میں گزارنے والی نو ماہ کی بچی نشوہ  آج دوران علاج انتقال کرگئی تھی، غلط انجکشن لگنے سے نو ماہ کی نشوا کا 71 فیصد دماغ مفلوج ہوچکا تھا۔

کمسن نشوہ کو آہوں اور سسکیوں میں سپردخاک کردیا گیا، اس سے قبل متوفیہ نشوہ کی نماز جنازہ گلستان جوہر کی جامعہ مسجد میں ادا کی گئی اس موقع پر مختلف سیاسی رہنماؤں، رشتےداروں سمیت علاقے کی عوام بھی بڑی تعداد میں موجود تھی۔

نماز جنازہ کے بعد والد ہاتھوں میں اٹھائے ننھی پری کو آخری آرام گاہ تک لےکر گئے، اس موقع پر والد قیصر موت سے لڑتی بیٹی کا حال سناتے ہوئے زارو قطار رو پڑے۔

نماز جنازہ میں تحریک انصاف کے خرم شیرزمان، پیپلز پارٹی کے سعیدغنی، عاجز دھامرہ، راشدربانی، ایم کیو ایم پاکستان کے عامرخان، خواجہ اظہار الحسن ،آصف حسنین ،یونس بارانی اور شریک ہوئے۔

اس کے علاوہ اداکار فیصل قریشی، سماجی رہنما جبران ناصر و دیگراہم شخصیات بھی موجود تھیں، ننھی نشوہ کو پہلوان گوٹھ کے مقامی قبرستان میں آہوں اور سسکیوں کے ساتھ سپرد خاک کردیا گیا۔

یاد رہے کہ چھ اپریل کو قیصرعلی اپنی نو ماہ کی جڑواں بیٹیوں نشوہ اور عمائشہ کو پیٹ درد کی شکایت پر اسپتال لائے۔ اگلے روزڈسچارج کے وقت نشوہ کو غلط انجکشن لگادیا گیا جس سے اس کا دماغ مفلوج ہوگیا۔

تیرہ اپریل کو نشوہ کو لیاقت نیشل اسپتال لایا گیا۔ دماغ کا سترفیصد حصہ مفلوج ہوچکا تھا، نو ماہ کی نشوہ نے دو ہفتے زندگی اور موت کی کشمکش میں رہی اور آخر کار ننھی پری یہ جنگ ہار کر سب کو روتا چھوڑ گئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں