The news is by your side.

Advertisement

دارالصحت اسپتال کی غفلت کے سبب مفلوج ہونے والی نشوا کی حالت میں بہتری

کراچی: صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی میں دارالصحت اسپتال میں غفلت کے سبب مفلوج ہونے والی 9 ماہ کی بچی نشوا کی حالت میں بہتری آنے لگی۔

تفصیلات کے مطابق لیاقت نیشنل اسپتال کے ترجمان انجم رضوی کا کہنا ہے کہ نشوا کی حالت بتدریج بہتر ہو رہی ہے، بچی کو ٹیوب کے ذریعے غذا دینا شروع کردی ہے۔

ترجمان کے مطابق آج صبح بھی بچی کا سی ٹی اسکین اور دیگر ٹیسٹ کیے گئے، نشوا کے دماغ کی سوجن بھی کم ہو رہی ہے۔ سوجن ختم ہونے پر پتہ چلے گا دماغ کا کتنا حصہ متاثر ہوا۔

انہوں نے بتایا کہ نشوا کا سی ٹی اسکین اور ایم آر آئی کیا گیا تھا، رپورٹس درست آئی ہیں۔ ایک دو روز میں نشوا کو وارڈ منتقل کر دیا جائے گا۔

خیال رہے کہ کراچی کے دارالصحت اسپتال میں نشوا کو ہائی پوٹینسی دوا کی اوور ڈوز دے دی گئی تھی۔ غلط انجکشن کی وجہ سے بچی کی طبیعت بگڑ گئی۔ نشوا ایک ہفتے تک وینٹی لیٹر پر اسپتال میں ہی ایڈمٹ رہی اور ایک ہفتے بعد جب وینٹی لیٹر ہٹایا گیا تو بچی پیرالائزڈ ہوچکی تھی۔

اسپتال انتظامیہ نے انجیکشن کے اوور ڈوز کی غلطی تسلیم کر لی تھی، انتظامیہ کا کہنا تھا کہ متعلقہ ملازم کو معطل کر دیا گیا ہے اور اس کے خلاف کارروائی کی جا رہی ہے۔ انتظامیہ کا کہنا تھا کہ بچی کے اہلخانہ جہاں بھی علاج کروانا چاہیں اخراجات دارالصحت اسپتال اٹھائے گا۔

گزشتہ روز ایس پی گلشنِ اقبال طاہر نورانی کی بچی کے والد کو دھمکیاں دینے کی فوٹیج بھی منظر عام پر آئی تھی۔

ایس پی نورانی نے بچی کے والد کو دھمکیاں دیتے ہوئے کہا تھا کہ مقدمہ درج کرنے سے ان کو کچھ نہیں ہوگا۔ آخر میں نقصان آپ کا ہی ہوگا۔

ایڈیشنل آئی جی کراچی امیر شیخ نے نشوا کے والد کو ایس پی گلشن جانب سے دھمکیاں دیے جانے کا نوٹس لیتے ہوئے آئندہ 48 گھنٹوں میں تحقیقاتی رپورٹ طلب کرلی تھی۔ انہوں نے ایس پی گلشن اقبال طاہر نورانی کو رپورٹ ملنے تک عہدہ چھوڑنے کی ہدایت بھی کی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں