The news is by your side.

Advertisement

‘آج کسی قسم کی کوئی ادائیگی آئی پی پیزکو نہیں کی گئی’

وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی و ترقی اسدعمر نے کہا ہے کہ آج کسی قسم کی کوئی ادائیگی آئی پی پیزکو نہیں کی گئی۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام پاور پلے میں گفتگو کرتے ہوئے اسدعمر نے کہا کہ آڈیٹر جنرل پالیسی فیصلے کرنے سے پہلے مداخلت نہیں کرتے، رقم کی ادائیگی کےدوران آڈیٹرجنرل کی مداخلت ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ آڈیٹرجنرل کوکوئی بائی پاس نہیں کیاگیا،آج کسی قسم کی کوئی ادائیگی آئی پی پیزکو نہیں کی گئی، چیئرمین نیپراسی سی اوای کےہراجلاس میں ہوتےہیں، معاہدےہم نےنہیں کیےبلکہ گزشتہ حکومتوں نےکیےہیں آج فیصلہ ہواکہ آئی پی پیزکوجتنےپیسےپہلےدیئےجاتےاس میں کمی کتنی ہوگی۔

اسدعمر کا کہنا تھا کہ آئی پی پیزسےمتعلق رپورٹ ہم نےجمع کرادی ہے، رپورٹ کیساتھ ہم نےسفارشات بھی جمع کرائی ہیں کمیٹی وزیراعظم عمران خان نےخودتحقیقات کیلئےبنائی تھی، وزیراعظم نےجب کمیٹی خودبنائی تھی تو رپورٹ کیوں چھپائیں گے؟ وزیراعظم نےرپورٹ پرمزیدتحقیقات کی ہدایات کی ہیں جیسےہی مزیدتحقیقات ہوتی ہیں رپورٹ سامنے آ جائے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ آرڈیننس جب آجائےتواس کامطلب ہےوہ قانون کاحصہ بن جاتاہے، آرڈیننس کوسپریم کورٹ کے ذریعے ہی واپس لیاجاسکتاہے، سینیٹ الیکشن شیڈول جاری ہوجائیگاتوپھرترمیم نہیں کی جاسکتی ہم سینیٹ میں خرید وفروخت روکنےکی بھرپورکوشش کررہےہیں، اسمبلی میں بل لےکرگئےجس پراپوزیشن بھی ناراض ہوگئی ہماری پوری کوشش ہےسینیٹ الیکشن شفاف ہوں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں