The news is by your side.

خاتون کا ملزمہ کو قتل کرکے اپنے ہی موت کا دعویٰ، دیکھنے والے حیرت زدہ رہ گئے

نوئیڈا میں 22 سالہ خاتون نے ایک مال کی ملازمہ کو قتل کرکے اور لاش کو اپنے ہی کپڑوں سے تبدیل کرکے اپنی موت کا جھوٹا دعویٰ کیا ہے۔

بھارت میڈیا کے مطابق نوئیڈا کی ایک 22 سالہ خاتون پائل نے مبینہ طور پر ایک خاتون کو قتل کرنے اور گرم تیل کا استعمال کرکے اس کا چہرہ بگاڑ کر اپنی موت کا جھوٹا دعویٰ کیا، اس جرم میں مبینہ طور پر اس کا شوہر اجے بھی اس کے ساتھ تھا۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق پائل بھٹی کا شوہر اجے ٹھاکر نے اس متاثرہ لڑکی ہیملتا سے پہلی دوستی کی اور پھر اسے مار ڈالا، ساتھ ہی پایل بھٹی کے نام سے ایک نوٹ بھی چھوڑا جس سے یہ سب معاملہ خودکشی ظاہر ہو۔

خودکشی نوٹ میں پائل نے لکھا کہ میرا چہرہ اب جل گیا ہے، اور میں اب زندہ نہیں رہنا چاہتی۔

12 نومبر کو گورسٹی مال کے قریب سے لاپتہ ہونے کے بعد ہیملتا کے اہل خانہ نے پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کرائی تھی۔

پولیس نے ہیملتا کا نمبر ٹریس کیا اور اس کے کال ریکارڈ میں اجے نامی شخص کا نمبر دریافت کیا۔ اس کے بعد پولیس نے اس کا نمبر ٹریس کر کے اسے اپنی تحویل میں لے لیا۔ اس سے پوچھ گچھ کے دوران پولیس کو معلوم ہوا کہ اجے اور اس کی بیوی پائل نے ہیملتا کا قتل کیا۔

پولیس نے بتایا کہ ملزم متاثرہ کو پائل بھٹی کے گھر لے گیا، اسے قتل کیا اور اس کی شناخت مشکل بنانے کے لیے اس کا چہرہ مسخ کر دیا۔ اس کے بعد پائل نے مبینہ طور پر لاش کو اپنا کپڑا پہنا کر اپنے ہی گھر میں پھینک کر موت کا جھوٹا دعویٰ کیا اور پھر اجے کے ساتھ فرار ہوگئی۔

ابتدائی تحقیقات سے پتہ چلا ہے کہ پائل بھٹی کے والدین کی موت تقریباً چھ ماہ قبل خودکشی سے ہوئی تھی اور اس نے ان کی موت کا ذمہ دار اپنے بھائی کے سسرال والوں کو ٹھہرایا تھا۔

پائل کے رشتہ داروں نے اس کے والد سے قرض لیا تھا اور جب انہوں نے رقم واپس کرنے کو کہا تو رشتہ داروں نے اسے ہراساں کرنا شروع کر دیا جس پر پائل کے والد نے اپنی زندگی کا خاتمہ کر لیا۔

پائل نے اپنے رشتہ داروں کو جھوٹے مقدمے میں پھنسانے کے لیے اپنی موت کا ڈرامہ کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں