The news is by your side.

Advertisement

نور مقدم قتل کیس : مرکزی ملزم ظاہر جعفر کے والدین کی ضمانت کا تحریری فیصلہ جاری

اسلام آباد : سپریم کورٹ مرکزی ملزم ظاہر جعفر کے والدین کی ضمانت پر فیصلے میں کہاہے کہ عصمت ذاکر کی خاتون ہونے کے ناطے درخواست ضمانت منظور کی جاتی ہے ، ضمانت کے غلط استعمال کی صورت میں ضمانت واپس لی جاسکتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق نور مقدم قتل کیس کے مرکزی ملزم ظاہر جعفر کے والدین کی ضمانت کے معاملے پر سپریم کورٹ نےذاکرجعفر، عصمت ذاکرکی ضمانت کا تحریری فیصلہ جاری کردیا، 3صفحات پرمشتمل فیصلہ جسٹس عمرعطابندیال نےتحریرکیا۔

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ عصمت ذاکرکی خاتون ہونےکےناطےدرخواست ضمانت منظورکی جاتی ہے، وہ 10لاکھ روپےکےضمانتی مچلکے جمع کرائیں تاہم ضمانت کے غلط استعمال کی صورت میں ضمانت واپس لی جاسکتی ہے۔

عدالتی فیصلے میں کہا ہے کہ عصمت ذاکرکو دفعہ 497کی ذیلی شق ایک کےتحت ضمانت دی جاتی ہے، قانون کےتحت 16سال سے کم عمر ملزم، خاتون یا بیمار کو ضمانت دی جا سکتی ہے۔

سپریم کورٹ کا کہنا تھا کہ ذاکرجعفرکی درخواست ضمانت واپس لینےکی بنیادپر خارج کی جاتی ہے جبکہ اسلام آبادہائیکورٹ کا 2 ماہ میں ٹرائل مکمل کرنے کافیصلہ برقرار رہے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں