The news is by your side.

Advertisement

نور مقدم قتل کیس : مرکزی ملزم ظاہر جعفر کے والدین کی بریت کو چیلنج کردیا گیا

اسلام آباد : اسلام آباد ہائی کورٹ میں نورمقدم قتل کیس میں مجرم ظاہر جعفر کے والدین سمیت 9ملزموں کی بریت کو چیلنج کردیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق نورمقدم قتل کیس میں 9ملزموں کی بریت کیخلاف اپیل دائر کردی گئی ، مدعی مقدمہ کی جانب سے وکیل نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں اپیل دائر کی۔

اپیل میں مجرم ظاہرجعفر کےوالدین ،عصمت آدم، خانساماں جمیل کی بریت کو چیلنج کیا گیا ہے جبلپ تھراپی ورکس کےسی ای او سمیت 6 ملزمان کی بریت کیخلاف بھی اپیل دائر کی ہے۔

مدعی مقدمہ کی جانب سے مالی جان محمد اور چوکیدارافتخار کو دیگردفعات کے تحت بھی سزا دینے کی اپیل کی ہے۔

اپیل میں کہا گیا ہے کہ ملزموں کیخلاف شواہد موجود ٹرائل کورٹ نے خلاف قانون بری کیا، ملزموں کی بریت ختم کرکے قانون کے مطابق سزا دی جائے۔

یاد رہے گذشتہ روز نورمقدم قتل کیس کے مرکزی ملزم ظاہر جعفر،مالی جان محمد اور چوکیدارافتخار کی سزا بڑھانے کی اپیل دائر کی گئی تھی۔

یاد رہے اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن عدالت کے جج عطا ربانی نے نور مقدم قتل کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے مرکزی ملزم ظاہر جعفر کو سزائے موت سنائی تھی۔

عدالت نے کیس کے شریک ملزمان جان محمد اور افتخار کو 10، 10 سال قید کی سزا سنائی تھی ، سزا پانے والا مجرم افتخار چوکیدار اور مجرم جان محمد مالی تھے۔

عدالت نے تھراپی ورکس کے ملزمان سمیت ظاہرجعفر کے والدین کو اعانت جرم کے الزام سے بھی بری کردیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں