The news is by your side.

Advertisement

شمالی کوریا کا بین البراعظمی بیلسٹک میزائل کے تجربہ کا دعویٰ

پیانگ یانگ : شمالی کوریا نے بین البراعظمی بیلسٹک میزائل کے تجربہ کا دعویٰ کیا ہے جبکہ اقوام متحدہ نے شمالی کوریا کے تجربے کی مذمت کی ہے۔

شمالی کوریا نے دعویٰ کیا ہے کہ بین البراعظمی بیلسٹک میزائل کا کامیاب تجربہ کیا، یہ میزائل دنیا کے کسی بھی حصے کو نشانہ بنا سکتا ہے۔ شمالی کوریا نے میزائل تجربے کواہم پیشرفت قراردے دیا ہے۔

شمالی کوریا میڈیا کے مطابق میزائل نے 39 منٹ تک پرواز کی اور وہ 2800 کلومیٹر کی بلندی تک جانے کے بعد بحیرۂ جاپان میں گرکے تباہ ہوگیا۔


مزید پڑھیں  : شمالی کوریا کا ایک اورمیزائل تجربہ


دوسری جانب جنوبی کوریا کے صدر مون جائے ان کا کہنا ہے کہ ان کی حکومت کا خیال تھا کہ شمالی کوریا نے جس میزائل کا تجربہ کیا ہے وہ درمیانی فاصلے تک مار کرنے والا ایک بیلسٹک میزائل تھا، اگر شمالی کوریا کا بین البراعظمی میزائل کا تجربہ کرنے کا دعویٰ درست ہے تو جنوبی کوریا کو حفاظتی اقدامات کرنے ہوں گے۔

دوسری جانب اقوام متحدہ نے شمالی کوریا کی جانب سے میزائل تجربے کی مذمت کی ہے، سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا کا اقدام سلامتی کونسل قراردادوں کی خلاف ورزی ہے۔

امریکی وزیر خارجہ ٹیلرسن نے شمالی کوریا کے تجربے کو امریکا کیلئے نیا خطرہ قرار دیا ہے ، ان کا کہنا ہے کہ عالمی خطرے کو روکنے کیلئے عالمی ایکشن کی ضرورت ہے۔

خیال رہے کہ شمالی کوریا نے بین البراعظمی بیلسٹک میزائل کا تجربہ ایسے وقت کیا، جب دنیا کے 20 بڑی معاشی طاقتوں کی تنظیم ‘جی-20’ کا سربراہی اجلاس جرمنی میں شروع ہونے والا ہے، جس میں عالمی رہنما شمالی کوریا کی جانب سے بین الاقوامی پابندیوں کی مسلسل خلاف ورزیوں سمیت دیگر معاملات پر بھی غور کریں گے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں