The news is by your side.

Advertisement

نون لیگ میں ایک اور بڑی بغاوت، پارٹی ٹکٹ نہ ملنے پرسردارمہتاب ناراض

ایبٹ آباد : انتخابات 2018 کےقریب آتے ہی ن لیگ مزید مشکلات سے دو چارہوگئی اور الیکشن مہم چلانا مشکل ہوگیا، ٹکٹوں کے معاملہ پرایک کے بعد ایک بڑی بغاوت سامنے آرہی ہے، اب ٹکٹ نہ ملنے پر سردارمہتاب بھی ناراض ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن الیکشن سے پہلے انتشار کا شکار ہے،چوہدری نثار،زعیم قادری اورچوہدری عبدالغفور کے بعد یک اوردیرینہ ساتھی نےعلم بغاوت بلند کرکے نون لیگ کی مشکلات میں اضافہ کردیا ہے۔

این اے پندرہ سے ٹکٹ نہ ملنے پر ہیوی ویٹ سردارمہتاب عباسی ناراض ہوگئے، ان کی جگہ مرتضیٰ عباسی کوٹکٹ دے دیا گیا، جس پر ایبٹ آباد سے ن لیگ کے دیگر چاروں امیدوار پی کے 36سے سردارفرید، پی کے 37 سے سردار اورنگزیب ، پی کے 38 سے ارشد اعوان اور پی کے39سےعنایت خان نے احتجاجاََ ٹکٹ واپس کر دیئے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ امیرمقام کے کہنے پر سردارمہتاب کو ٹکٹ نہیں دیا گیا۔

دوسری جانب گوجرانوالہ میں یوتھ ونگ پارٹی قیادت کیخلاف سراپا احتجاج ہے، مظاہرین نے دھمکی دی ہے کہ گوجرانوالہ کے سٹی صدر شعیب بٹ کو ٹکٹ نہ دیا گیا تو الیکشن کا بائیکاٹ کردیں گے۔

گذشتہ روز چکوال میں ٹکٹوں کے اجراء پر ممتاز ٹمن گروپ نے ن لیگ سے علیحدگی کا فیصلہ کیا  تھا ، یہ فیصلہ ن لیگ نے سردار ممتازٹمن کو ٹکٹ دے کر واپس لینے پر کیا گیا۔


سابق صوبائی وزیر عبدالغفور میو نے بھی ن لیگ سے بغاوت کردی


اس سے قبل (ن) لیگ کے خلاف ایک اورلیگی رہنما نے اعلان بغاوت کیا تھا ، مسلم لیگ (ن) کے ناراض رہنماعبدالغفور کا کہنا تھا کہ (ن) لیگ میں ٹکٹیں بکتی ہیں، کون سا ٹکٹ کتنے میں بکا اور کس نے گورنر بننے کیلئے کتنے پیسے دیے مجھے سب پتا ہے۔

یاد رہے کہ ٹکٹ نہ ملنے پر زعیم قادری بھی کہہ چکے ہیں کہ لاہور کسی کے باپ کی جاگیر نہیں جبکہ چوہدری نثارکامعاملہ بھی ن لیگ سے سلجھ نہ سکا۔

سیاسی ماہرین کا کہنا ہے کہ ایسی صورتحال میں ن لیگ کیلئے انتخابات دو ہزاراٹھارہ کڑاامتحان ثابت ہوسکتا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں