The news is by your side.

Advertisement

‘منتخب نمائندہ نہیں، عمران خان کی ہدایت پر اثاثےظاہر کیے’

اسلام آباد: معاون خصوصی و چیئرمین سی پیک اتھارٹی عاصم سلیم باجوہ نے کہا ہے کہ منتخب نمائندہ نہیں پھربھی عمران خان کی ہدایت پر اثاثےظاہر کیے۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام ‘آف دی ریکارڈ’ میں گفتگو کرتے ہوئے عاصم سلیم باجوہ نے کہا کہ سی پیک اتھارٹی میں تعیناتی ہوئی توپروپیگنڈاشروع کردیاگیا، میرےخلاف پروپیگنڈاکیاگیاکہ میری تنخواہ50لاکھ ہےحالانکہ میری سی پیک اتھارٹی میں تنخواہ7لاکھ اور99ہزارہے۔

عاصم سلیم باجوہ نے کہا کہ میرےبھائیوں نے2002میں امریکامیں کاروبارشروع کیا،میرے3بھائی 1991میں امریکا پڑھنےگئےتھےاورپھرکاروبارکیا، کاروبار سے متعلق لکھا ہوا ہےکہ60فیصد بینکوں سےقرضہ لیاگیا۔

ان کے مطابق کاروبارمیں50سےزائدسرمایہ کارشامل ہیں اور زیادہ تر ڈاکٹرز ہیں، کاروبارمیں سب کی سرمایہ کاری بھی ہمارےکھاتےمیں ڈال دی گئی،امریکا اورپاکستان میں ڈیٹاجمع کرکےتردیدجاری کررہاہوں۔

انہوں نے کہا کہ 2002میں ایک اسٹور کھولا گیا تو فیملی نےپیسےجمع کرکےایکوٹی شوکی تھی، تاریخ میں کبھی کسی نےسوشل میڈیااسٹوری پرایسی تردید دی، دستاویزی شواہدموجودہیں متعلق فورم پرپیش بھی کیےجاسکتےہیں، الزامات پراتنی تفصیل فراہم کی ہےکیا آج تک کسی نےایساکیاہے۔

چیئرمین سی پیک اتھارٹی کے مطابق بھائیوں کےپاس تمام کاروبارکی منی ٹریل،دستاویزات موجودہیں، اہلیہ اوربیٹوں سےمتعلق بھی تمام ٹرانزیکشن اورمنی ٹریل موجودہے جہاں دستاویزی ثبوت کی ضرورت ہوگی پیش کریں گے، کاروبارکی تمام تفصیلات بتارہےہیں اوردستاویزات بھی موجودہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں