امریکا کی حمایت کے باوجود بھارت کا نیوکلیئر سپلائر بننے کا خواب چکنا چور -
The news is by your side.

Advertisement

امریکا کی حمایت کے باوجود بھارت کا نیوکلیئر سپلائر بننے کا خواب چکنا چور

نئی دہلی : امریکا کی حمایت کے باوجود بھارت کا نیوکلیئر سپلائر گروپ کا ممبر بننے کا خواب چکنا چور ہوگیا۔

وزیراعظم نریندر مودی نے دنیا کے چکر لگائے امریکا کی حمایت سمیٹی اور آخری وقت میں چین کو رام کرنے کی کوشش بھی کی لیکن اس ساری بھاگ دوڑ کا نتیجہ صفر نکلا، نیوکلیئر سپلائیرز گروپ نے مودی جی کے ارمانوں پر پانی پھیر دیا، کچھ ممالک نے وعدے کے باوجود نیوکلیئر سپلائی گروپ کے اجلاس کے دوران بھارت کی حمایت سے صاف انکار کردیا ۔

دوسری جانب ترکی برازیل، آسٹریا، نیوزی لینڈ اور آئرلینڈ نے بھارت کی کھل کر مخالفت کی جبکہ چین تو پہلے ہی بھارت کو لال جھنڈی دکھا چکا تھا۔

بھارت کو انٹرنیشنل اٹامک انرجی ایجنسی سے معاہدے کی پاسداری نہ کرنے پر بھی تنقید کا سامنا کرنا پڑا، ناقدین نے بھارت کے جوہری پروگرام کو دنیا کا سب سے غیر محفوظ پروگرام قرار دے دیا۔

واضح رہے نیو کلیئر سپلائر گروپ میں 48 ممالک شامل ہیں جو دنیا بھر میں جوہری مواد کے معاملات کو دیکھتے ہیں اور رکن ممالک کو جوہری موادکی تجارت کا اختیار حاصل ہے.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں