چین میں زلزلہ: نرسوں نے جان کی پروا کیے بغیر نوزائیدہ بچوں کو اسپتال سے نکال لیا -
The news is by your side.

Advertisement

چین میں زلزلہ: نرسوں نے جان کی پروا کیے بغیر نوزائیدہ بچوں کو اسپتال سے نکال لیا

بیجنگ: چین کے جنوب مغربی صوبے یونن میں دو روز قبل آنے والے زلزلے کے دوران تین بہادر نرسوں نے نوزائیدہ بچوں کو اپنی جان کی پروا کیے بغیر اسپتال سے بہ حفاظت باہر نکال لیا۔

تفصیلات کے مطابق جنوب مغربی چین کے شہر یوژی کی تونغائی کاؤنٹی میں زلزلے کے دوران نرسوں کی بہادری کا واقعہ دنیا بھر میں شہرت حاصل کر گیا ہے، انھوں نے جان کی پروا کیے بغیر تین نوزائیدہ بچوں کی حفاظت کی۔

سی سی ٹی وی کیمروں میں محفوظ فوٹیجز کے مطابق 13 اگست 2018 کو جنوب مغربی چین میں آنے والے زلزلے کے دوران اسپتال کے نوازائیدہ بچوں کے انتہائی نگہداشت وارڈ میں تین بچے موجود تھے۔

ایک نرس ریسپشن ایریا میں اپنے کام میں مصروف تھی کہ زلزلہ آ گیا، در و دیوار ہلنے لگے اور خوف ناک آوازیں آنے لگیں، نرس نے فوراً نیونیٹل وارڈ کی طرف دوڑ لگادی۔

نوزائیدہ بچوں کے نگہداشت وارڈ میں دو نرسیں موجود تھیں، ایک نرس نے گرم کپڑا اٹھایا اور انکوبیٹر میں موجود ایک بچے کو ڈھانپنے لگیں تاکہ وہ گرم رہے۔

دوسرے انکوبیٹر سے نرس نے ایک وقت میں ایک بچہ اٹھایا اور باہر کی طرف تیزی سے چلی گئی، تینوں نرسوں نے ایک وقت میں ایک بچہ اٹھایا۔

یہ یقینی بنانے کے بعد کہ بچے محفوظ ہیں، نرسز اپنی حفاظت میں بچوں کو لے کر اسپتال سے باہر آئیں، اور تب تک بچوں کو اپنے بازوں میں رکھا جب تک ان کے والدین نہیں پہنچے۔

چینی پولیس فورس کے سربراہ کی مزار قائد پر حاضری، رینجرز ہیڈ کوارٹرز کا دورہ

چین میں رونما ہونے والا یہ واقعہ نرسز کی پیشہ ورانہ ایمان داری کے ساتھ ساتھ انسانی ہم دردی کی بھی ایک بڑی مثال بن گیا ہے، ان نرنسوں کا تعلق ایک قصباتی اسپتال سے تھا، نرسوں نے بہت بہادری دکھائی اور تیز رفتاری سے اپنا فریضہ انجام دیا۔

واضح رہے کہ 13 اور 14 اگست کو چین کے جنوب مغربی صوبے میں 5.0 شدت کا زلزلہ آیا، زلزلے میں 24 افراد زخمی ہو ئے، 70 ہزار سے زائد لوگ متاثر ہوئے، اور 33 ہزار سے زائد متاثرین نے محفوظ مقامات کی جانب نقل مکانی کی جب کہ 8 ہزار سے زائد گھروں کو نقصان پہنچا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں