site
stats
عالمی خبریں

سانحہ نائن الیون: امریکی سیاہ فام اسلام قبول کرلیں یا حملوں کے لیے تیاررہیں،القاعدہ

واشنگٹن : سانحہ نائن الیون کی 15 ویں برسی کے موقع پر امریکا بھر میں تقریبات منعقد کی گئیں امریکی صدر نے خصوصی بیان میں کہا کہ جس تنظیم نے ہماری زمین پر حملہ کیا اُس کا مکمل قلع قمع کردیا۔

سانحہ نائن الیون کی 15 ویں برسی پر امریکی صدر بارک اوبامہ نے اپنے خصوصی ریڈیو اور آن لائن پیغام میں امریکی قوم سے مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ امریکی قوم کی عظمت اور سبقت کی وجہ امریکیوں کی گوناں گوں ہونا، مذہب، قوم اور نسل کا خیر مقدم کرنا اورانہیں برابرسمجھنا ہے دہشت گردی کا متحد ہوکر مقابلہ کرنا ہوگا ہم دہشت گردوں کے سامنے ہتھیار نہیں ڈال سکتے۔

USA POST 1

صدراوبامہ نے اپنے پیغام میں بتایا کہ ہماری زمین پر حملہ آور ہونے والی تنظیم القاعدہ کے سربراہ اسامہ بن لادن کو ہم نے کیفر کردار تک پہنچا کراپنی داخلی سکیورٹی کو مضبوط بنالیا ہے اورانسانی جانوں کو مزید ہلاکت سے بچالیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : نائن الیون کو آج پندرہ سال مکمل ہوگئے

اسی طرح ہم افغانستان، شام اور عراق میں القاعدہ اور داعش جیسی دہشت گرد تنظیموں کے خلاف بھی متحد ہوکر ان کا مقابلہ کر رہے ہیں۔

USA POST 2

صدر اوبامہ نے بتایا کہ امریکہ کے مختلف مقامات پر دہشت گردی کے واقعات ہوتے رہتے ہیں جن میں بوسٹن، سان برنارڈینو اور لینڈو شامل ہیں،ہمارے عزم توانا ہیں اور دہشت گردی کے مکمل خاتمے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے۔

سانحہ نائن الیون کی 15 ویں برسی پرالقاعدہ کا ردعمل :

دریں اثناء سانحہ نائن الیون کی برسی کے موقع پر القاعدہ کا نیا پیغام سامنے آگیا ہے جس میں خبردار کیا گیا ہے کہ امریکہ کے سیاہ فام اسلام قبول کرلیں بہ صورت دیگر مزید حملے کریں گے۔

خبررساں ایجنسی ’اے این این‘القاعدہ نے اپنے پیغام میں کہا کہ نائن الیون مسلمانوں کو امریکی جارحیت کا مقابلہ کرنے کی یاد دہانی کراتا ہے،مسلمان امریکہ کے خلاف القاعدہ میں شامل ہوں۔

القاعدہ نے کہاکہ امریکہ میں نسلی منافرت ،عدم مساوات اور تعصب کا شکار امریکی سیاہ فام امریکہ میں جس نظام کے تحت زندگی گزاررہے ہیں وہ ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top