The news is by your side.

Advertisement

کراچی ایئرپورٹ پر کھڑے ناکارہ طیارے خطرے کی علامت بن گئے

کراچی: کراچی ایئر پورٹ پر گزشتہ کئی سال سے کھڑے ناکارہ طیارے پرندوں کا گھر بن گئے جس کے باعث طیاروں کی حفاظت کو خدشات لاحق ہوگئے، ناکارہ طیارے پارکنگ کے مسائل کا سبب بھی بن رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی کے ایئرپورٹ پر کھڑے ناکارہ طیارے خطرے کی علامت بن گئے، ناکارہ طیاروں کے باعث اڑتے جہازوں کو خطرات لاحق ہیں۔

ناکارہ طیارے کھڑے رہنے سے کئی مسائل جنم لے رہے ہیںِ، خراب طیاروں میں پرندوں نے گھونسلے بھی بنا لیے۔ پرندوں کی وجہ سے جہازوں سے پرندے ٹکرانے کے واقعات بھی رونما ہورہے ہیں۔

ایئرپورٹ پر کھڑے طیاروں میں سے کسی کا انجن خراب تو کسی کے پر غائب ہیں۔ سول ایوی ایشن اتھارٹی نے ناکارہ طیارے ہٹانے کے لیے متعلقہ اداروں کو متعدد خطوط لکھے ہیں۔

سول ایوی ایشن ذرائع کا کہنا ہے کہ طیاروں پر ٹیکس ادئیگی کے کروڑوں روپے واجب الادا ہیں، سول ایوی ایشن ناکارہ طیاروں کو ہٹانے یا بیچنے کا فیصلہ از خود نہیں کر سکتی، ناکارہ طیاروں کو ہٹانے کی ذمہ دار کسٹم کلکٹریٹ ہے۔

ایوی ایشن ذرائع کے مطابق کئی ناکارہ طیارے ویٹ اور ڈرائی لیز پر حاصل کیے گئے تھے۔ غیر ملکی کمپنیاں ناکارہ طیاروں کو بھاری ٹیکس ادائیگی کے باعث نہیں ہٹا رہیں، طیارے گزشتہ کئی سال سے کراچی ایئرپورٹ پر کھڑے ہیں۔

انتظامیہ ناکارہ طیاروں سے پرندوں کو دور رکھنے کے لیے بھاری رقم بھی خرچ کر رہی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں