The news is by your side.

Advertisement

مقبوضہ کشمیر میں لاک ڈاؤن کو155 روز ہوگئے، بھارتی فوج کے مظالم جاری

سری نگر : مقبوضہ کشمیر میں بھارتی حکومت کے لاک ڈاؤن کو155 روز مکمل ہوگئے اور سیکیورٹی فورسز کے نہتے نہتے لوگوں پر مظالم مسلسل جاری ہیں۔

کشمیر میڈیا سروس کا کہنا ہے کہ لاک ڈاؤن کا تسلسل تاحال برقرار ہے، مقبوضہ علاقے کے چپے چپے پر بڑی تعداد میں بھارتی فوجی تعینات ہیں۔

مقبوضہ وادی میں انٹرنیٹ، موبائل سروس بدستورمعطل ہیں جبکہ تعلیمی اورکاروباری مراکز بند بھی بند ہیں، اس صورتحال کی وجہ سے لوگ ایک دوسرے سے رابطہ بھی نہیں کرسکتے جبکہ دفاتر اور تعلیمی ادارے عملے اور طلباء سے خالی ہیں۔

اس حوالے سے سابق بھارتی وزیرخزانہ چدم برم نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیرکو عملاً کھوچکا ہے، جمہوری ملک کسی خطے کی پوری آبادی کو محاصرے میں نہیں رکھ سکتا، مودی سرکار مقبوضہ کشمیر کی آبادی کو بطور دہشت گرد، پرو پاکستان دیکھتی ہے۔

علاوہ ازیں مقبوضہ کشمیر میں فوجی محاصرے اوردیگر پابندیوں کی وجہ سے خوف و دہشت کا ماحول اور غیر یقینی صورتحال بدستور جاری ہے، جس کی وجہ سے مقبوضہ وادی میں لوگ شدید مشکلات سے دوچار ہیں۔

انسانی حقوق کی مقامی تنظیم جموں وکشمیر کولیشن آف سول سوسائٹی نے سری نگر سے جاری اپنی سالانہ رپورٹ میں کہا ہے کہ بڑوں کے ساتھ ساتھ بچوں کو بھی غیر قانونی اور بلاجواز قید اور اس دوران بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں ظلم و تشدد سمیت غیر انسانی سلوک کا سامنا بھی کرنا پڑا۔

اس کے علاوہ مقبوضہ علاقے میں مسلسل فوجی محاصرہ، کرفیو اور پابندیاں جاری ہیں اور مسلسل دفعہ 144 کے نفاذ سے عوام کے بنیادی حقوق کی کھلی خلاف ورزی ہو رہی ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں