The news is by your side.

Advertisement

بھارت میں حجاب پر پابندی، او آئی سی نے بھی آواز اٹھادی

اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) نے بھارت میں حجاب پہننے پر پابندی اور مسلم کش اقدامات پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق او آئی سی نے ہندوتوا سوچ کے حامل طبقے کے مسلمانوں کی نسل کشی کے مطالبات پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

او آئی سی جنرل سیکریٹریٹ سے جاری بیان میں بھارت میں حجاب پہننے پر پابندی کے واقعات پر اظہار تشویش کرتے ہوئے بھارتی حکومت سے مسلمانوں کی سلامتی اور فلاح وبہبود کو یقینی بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔

او آئی سی نے بھارت میں حجاب پر پابندی سے متعلق حالیہ پرتشدد واقعات پر بھی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے مودی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ مسلمانوں پر تشدد، نفرت انگیز جرائم پر اکسانے والوں کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے۔

او آئی سی نے عالمی برادری اور اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے ضمیر کو جھنجھوڑتے ہوئے ان سے بھی بھارت میں اینٹی مسلم مہم کے خلاف موثر اقدامات کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ او آئی سی بھارت کی انتہا پسند حکومت کے مسلم کش اقدامات کی کھل کر مذمت کرتی رہی ہے۔

مزید پڑھیں: بھارت میں مسلم کش فسادات پر او آئی سی نے خاموشی توڑ دی

گزشتہ سال ہونے آسام میں ہونے والے مسلم کش اقدامات کو او آئی سی نے منظم ظلم وتشدد قرار دیا تھا۔

یاد رہے کہ بھارتی ریاست آسام میں 25 ستمبر کو غیر قانونی تجاوزات کی آڑ میں دو مسلمانوں کی شہادت پر شدید ردعمل سامنے آیا تھا، واقعے کو ‘حیوانیت کی انتہا قرار دیا گیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں