The news is by your side.

Advertisement

مکہ سمٹ میں اسلامو فوبیا، مسئلہ کشمیر اور فلسطین کی طرف توجہ دلائی، شاہ محمود قریشی

ملتان : وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ مکہ سمٹ میں اسلامو فوبیا، مسئلہ کشمیر اور فلسطین کی طرف بھی توجہ دلائی، یک زبان ہوکر بات کرینگے تو مغرب ہماری بات پرتوجہ دے گا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے ملتان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ او آئی سی اجلاس میں مسلم امہ کے تمام وزرائے خارجہ موجود تھے، اجلاس میں پاکستان نے تین اہم مسائل پر مسلم امہ کی توجہ دلائی۔

مکہ سمٹ میں اسلامو فوبیا، مسئلہ کشمیر اور فلسطین میں اسرائیلی مظالم پر مسلم امہ کی توجہ مبذول کروائی۔ یک زبان ہوکر بات کرینگے تو مغرب ہماری بات پر توجہ دے گا۔

وزیرخارجہ کا مزید کہنا تھا کہ توہین آمیز خاکوں سے مسلم امہ کے جذبات کو ٹھیس پہنچی اور مقبوضہ کشمیر کے حالات بھی پہلے سے بہت زیادہ پیچیدہ ہوچکے ہیں، او آئی سی میں اسلامو فوبیا پرمتفقہ لائحہ عمل پر اتفاق کیا۔

انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر رپورٹس آچکی ہیں، مودی نے نئی کابینہ کا اعلان کردیا دیکھتے ہیں بات کب آگےبڑھتی ہے، پاکستان کا مؤقف ہمیشہ یہی رہا ہے کہ مذاکرات کا حل میز پر ہے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاکستان نے او آئی سی میں مسئلہ فلسطین کی طرف بھی توجہ دلائی، مشرق وسطیٰ میں دیرپا امن کیلئے فلسطین کے مسئلے کا حل ناگزیر ہے، ہم سمجھتے ہیں کہ گولان ہائیٹس شام کا حصہ ہے۔

گولان ہائیٹس اور سفارتخانہ تل ابیب سے منتقل کرنے کے معاملے پر تحفظات ہیں، شاہ محمود قریشی نے کہا کہ او آئی سی اجلاس میں افغانستان کی صورتحال پر بھی بات ہوئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں