The news is by your side.

Advertisement

لارڈز کے شاہینوں کے پَر اولڈ ٹریفورڈ آکر کُتر گئے

اولڈ ٹریفورڈ : مانچسٹر کے اولڈ ٹریفورڈ اسٹیڈیم میں جاری دوسرے ٹیسٹ میچ میں انگلینڈ کے 589 رنز کے جواب میں قومی ٹیم محض 198 رنز پر ڈھیر ہوگئی،انگلینڈ نے فالو آن دینے کے بجائے خود بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا۔

تفصیلات کے مطابق اولڈ ٹریفورڈ ٹیسٹ کے تیسرے روز پاکستانی ٹیم انگلینڈ کے خلاف 198 رنز پر آؤٹ ہوگئی یوں قومی ٹیم کو 391 رنز کے خسارے کا سامنا ہے جب کہ انگلش ٹیم نے پاکستان کو فالو آن نہ کرانے کا فیصلہ کیا ہے تا ہم ایک بار پھر بارش کے باعث تاخیر سے شروع ہوا،پاکستان کی جانب سے سب نمایاں بلے باز قومی ٹیم کے کپتان مصباح الحق رہے جنہوں نے 52 رنز کی عمدہ اننگ کھیلی۔

england-post-3

تیسرے روز کا کھیل بارش کے باعث تھوڑی تاخیر سے شروع ہوا تو مصباح الحق 1 اور شان مسعود 30 رنز کے ساتھ وکٹ پر موجود تھے تا ہم شان مسعود زیادہ دیر تک وکٹ پر نہ رک سکے اور 39 رنز بنا کر جیمی اینڈرسن کا پہلا شکار بن گئے جس کے بعد اسد شفیق کپتان کا ستھ دینے گراؤنڈ میں آئے لیکن 31 ویں اوور میں ایک بار پھر بارش کے باعث میچ روک دیا گیا۔

england-post-1

بارش کے بعد میچ دوبارہ شروع ہوا تو اسد شفیق محض 4 رنز بنا کر کپتان کو داغ مفارقت دے گئے وہ کرس براڈ کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہو گئے،اسد شفیق کے بعد وکٹ کیپر بلے باز سرفراز احمد 18 گیندوں پر 26 رنزکی جارحانہ اننگز کھیل کر پویلین لوٹ گئے جس کے فوری بعد کہ یاسر شاہ بھی ووکس کا شکار بنے۔

اس موقع پر مصباح الحق نے وہاب ریاض کے ہمراہ نویں وکٹ کیلیے میچ کی سب سے بڑی 60 رنز کی شراکت داری قائم کی،یہ شراکت داری انگلش بولر معین علی کے ہاتھوں کو ختم ہوئی جب مصباح الحق 52 کے انفرادی اسکور بنانے کے بعد آؤٹ ہو گئے،مصباح کے بعد وہاب ریاض نے 39 رنز کی جارحانہ اننگز کھیلی۔

england-post-2

انگلینڈ کی جانب سے کرس ووکس سب سے کامیاب بولر رہے انہوں نے 4 پاکستانی کھلاڑیوں کو ڈریسنگ روم کی راہ دکھائی جب کہ بین اسٹوکس اور معین علی 2،2 کھلاڑیوں کو پویلین بھیجا اور اسٹورٹ براڈ اور جیمز اینڈرسن نے ایک ایک وکٹ حاصل کرنے میں کامیاب رہے۔

اس سے قبل ٹیسٹ کے دوسرے روز انگلینڈ نے 314 رنز سے اپنی نامکمل اننگز کا آغاز کیا تو جوئے روٹ 141 اور کرس ووکس 2 رنز پر وکٹ پر موجود تھے، ووکس 58 رنز کی اننگز کھیل کر آؤٹ ہوئے جب کہ روٹ نے شاندار ڈبل سنچری اسکور کرتے ہوئے 254 رنز پر وہاب ریاض کا نشانہ بنے۔ دیگر کھلاڑیوں میں بین اسٹوک 34، جونی برسٹو 58 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔واضح رہے انگلیںڈ نے 589 رنز پر اپنی اننگز ڈیکلئر کردی تھی،انگلینڈ کی جانب سے جوئے روٹ نے 254 رنز کی قیمیتی اننگز کھیلی تھی جب کہ اُن کا ساتھ کپتان کُک نے سینچری بنا کر دیا تھا۔

england-post-4

پہاڑ جیسے بڑے اسکور کو دیکھ کر پاکستانی بیٹنگ لائن لڑکھڑاگئی اور ابتدا ہی میں 57 رنز پر ہی 4 کھلاڑی پویلین لوٹ گئے تھے، محمد حفیط 18 بنا کر آؤٹ ہوئے جب کہ یونس خان اور اظہر علی ایک ایک رن بنا کر صفر پر آؤٹ ہونے کی ہزیمت سے بچ گئے اس طرح کپتان مصباح الحق کے علاوہ کوئی بلے باز وکٹ پر نہیں ٹہر سکا اور یوں پاکستانی بیٹنگ لائن 589 کے جواب میں 198 کے مجموعی اسکور پر ریت کی دیوار کی طرح ڈھیر ہو گئی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں