The news is by your side.

Advertisement

اسلام آباد ہائی کورٹ: آن لائن ٹیکسی سروس کے خلاف دائر درخواست کی سماعت

اسلام آباد: آن لائن ٹیکسی سروس کے خلاف ٹیکسی ڈرائیور ایسوسی ایشن کی دائرکردہ درخواست پر اسلام آباد ہائیکورٹ میں سماعت ہوئی.

سماعت جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل سنگل رکنی بینچ نے کی. ٹیکسی ڈرائیور ایسوسی ایشن کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ اوبر، کریم سروس اور ان سے منسلک گاڑیوں کے مالکان کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی کی جائے.

وکیل کا کہنا تھا کہ عام ٹیکسی ڈرائیوروں کو پرمٹ اور لائسنس لینا پڑتا، سالانہ واجبات کی ادائیگی کے ساتھ گاڑی پر ٹیکسی کا  مخصوص رنگ بھی کرانا پڑتا ہے، جب کہ آن لائن ٹیکسی سروس سے منسلک گاڑیوں کے ڈرائیوروں کی اکثریت کے پاس لائسنس تک نہیں.

وکیل ٹیکسی ڈرائیور ایسوسی ایشن کا مزید کہنا تھا کہ پبلک ٹرانسپورٹ تو چلائی جا رہی ہے، مگر کوئی ٹیکس نہیں دیا جاتا، گاڑی آپ کی نہ ہو، تب بھی ہر شخص آپ کے پاس انرول ہو کر ٹیکسی چلا سکتا ہے.


دبئی، اوبر اور کریم نے کرایے میں اضافہ کا اعلان کردیا


وکیل نے مزید کہا کہ یونیورسٹی کے بچے آن لائن ٹیکسی چلا رہے ہیں، پچھلے تین دنوں میں آن لائن ٹیکسی کے 3 ڈرائیورز قتل ہوچکے ہیں، صورت حال سنگین ہے۔

دوران سماعت جسٹس محسن اختر کیانی نے کہا کہ اس وقت اہم سوال یہ ہے کہ اس معاملے کو ریگولیٹری فریم ورک میں لانا ہے .اس موقع پر آر ٹی اے نے کہا کہ ہمارے ہاتھ بندھے ہوئے ہیں، آن لائن ٹیکسی سے متعلق ایک اور کیس جسٹس اطہر من اللہ کی عدالت میں ہے.


سعودیہ عرب : اوبر کا خواتین کو ڈرائیونگ کی تربیت اور روزگار دینے کا اعلان


عدالت نے کیس چیف جسٹس انور کاسی کو بھجوا دیا، آئندہ دونوں کیسز کی سماعت ایک ہی جج کریں گے، چیف جسٹس یہ درخواست جسٹس اطہر من اللہ کے پاس مارک کریں گے.


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں