The news is by your side.

Advertisement

پیرس میں چاقو بردار شخص کا حملہ، داعش نے ذمہ داری قبول کرلی

فرانس :پیرس میں چاقو بردار شخص کے حملے کی ذمہ داری عالمی دہشت گرد تنظیم داعش نے ذمہ داری قبول کرلی۔ چاقو زنی کے واقعے میں ایک شخص ہلاک 5 زخمی ہوئے تھے۔

تفصیلات کے مطابق فرانس کے دارالحکومت پیرس میں چاقو برادر شخص نے راہ چلتے شہریوں پر اچانک حملہ کر دیا، جس کے باعث ایک شہری ہلاک ہوگیا تھا، بعد ازاں پولیس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے حملہ آور کو ہلاک کر دیا۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا تھا کہ اطلاع ملتے ہی پولیس نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے ملزم کو موقع پر ہی ہلاک کردیا گیا، تاہم اس حملے میں 5 شہری زخمی ہوئے تھے جن میں دو کی حالت تشویش ناک ہے، جنہیں مقامی اسپتال میں طبی امداد فراہم کی جاری ہے۔

غیر ملکی خبر رساں اداروں کا کہنا تھا کہ گذشتہ روز پیرس میں ہونے والے چاقو بردار شخص کے حملے کی ذمہ داری داعش نے قبول کی ہے کہ ’ہمارے ایک سپاہی نے گذشتہ روز کامیاب حملہ کیا ہے‘۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے واقعے کے عینی شاہدین کا کہنا تھا کہ چاقو بردار شخص نے حملہ کرتے ہوئے ’اللہ اکبر‘ کے نعرے لگا رہا تھا۔

واقعے کے عینی شاہدین کا کہنا تھا جائے حادثہ پیرس کی مہشور جگہ ہے جہاں شہریوں کا بہت زیادہ رش ہوتا ہے، حملہ ہوتے ہی عوام اپنی جان بچانے کے لیے کیفے اور ریستورانٹ کی طرف بھاگ رہی تھی۔

فرانس کے صدر ایمیئنول مکرون کا کہنا تھا کہ ’فرانس نے ایک مرتبہ پھر خون سے قیمت ادا کی ہے لیکن ہم دشمنوں کو ذرہ بھی آزادی نہیں دیں گے۔


فرانس:پولیس نے سپرمارکیٹ پر حملہ کرنے والے شخص کوہلاک کردیا


خیال رہے کہ پیرس میں اس قسم کے واقعات معمول بن چکے ہیں، 2016 سے 2018 کے آغاز تک فرانس میں درجنوں افراد چھرے اور چاقو کے حملوں میں اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں، البتہ ایسے حملوں سے بچنے کے لیے فرانس کے مختلف علاقوں میں سیکیورٹی ہائی الرٹ ہے۔


فرانس: مسلح شخص کا سپر مارکیٹ پر حملہ، دو افراد ہلاک، متعدد زخمی


یاد رہے کہ گذشتہ برس پیرس میں دو ملسح افراد نے مقامی سپر مارکیٹ میں موجود شہریوں کو یرغمال بنایا تھا بعد ازاں پولیس نے کارروائی کی جس کے نتیجے میں پولیس اور ملزمان کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ ہوا اور دونوں ملزمان موقع پر ہی ہلاک ہوگئے تھے۔

واضح رہے کہ گذشتہ سال 12 نومبر کو فرانس کے شہر کلیشی میں سڑک کنارے نماز پڑھتے مسلمان شہریوں پر مشتعل افراد کی جانب سے حملہ کیا گیا تھا جس کے نتیجے میں سینکڑوں افراد شدید زخمی ہوگئے تھے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں