العزیزیہ، فلیگ شپ ریفرنسز: نوازشریف کا ٹرائل کھلی عدالت میں کرنے کا فیصلہ -
The news is by your side.

Advertisement

العزیزیہ، فلیگ شپ ریفرنسز: نوازشریف کا ٹرائل کھلی عدالت میں کرنے کا فیصلہ

اسلام آباد: العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنسز میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کا ٹرائل اوپن کورٹ میں کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایون فیلڈ ریفرنس میں دس سال قید کی سزا پانے والے سابق وزیر اعظم نواز شریف کا مزید دو ریفرنسز میں ٹرائل کھلی عدالت میں کیا جائے گا۔

العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنسز میں کھلی عدالت میں کیس کی سماعت کو یقینی بنانے کے لیے وفاقی کابینہ کل جیل ٹرائل کا نوٹی فکیشن واپس لینے کی منظوری دے گی۔

کل اسلام آباد میں نگراں کابینہ کے منعقد ہونے والے اہم اجلاس میں ملک میں امن و امان کی بگڑی صورتِ حال سے متعلق بھی اہم ترین فیصلے متوقع ہیں۔

وفاقی وزیرِ داخلہ نگراں کابینہ اجلاس میں ملک میں دہشت گردی کے واقعات کے بعد امن و امان کی صورت حال پر بریفنگ دیں گے۔

اجلاس میں ملک میں ڈیموں کی تعمیر کے سلسلے میں بھی اہم پیش رفت ہوگی، چیف جسٹس کے قائم کردہ ڈیمز فنڈ کے لیے تنخواہوں کی کٹوتی کی منظوری دی جائے گی۔

احتساب عدالت میں نوازشریف کے خلاف ریفرنسز کی سماعت کل تک ملتوی

کابینہ اجلاس میں آئل اینڈ گیس ڈویلپمنٹ کمپنی لمیٹڈ (او جی ڈی سی ایل) اور پاکستان پیٹرولیم لمیٹڈ (پی پی ایل) کے ڈائریکٹرز کی نامزدگی واپس لینے کی منظوری بھی دی جائے گی۔

واضح رہے کہ احتساب عدالت میں سزا یافتہ سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنس کی سماعت جاری ہے، یہ سماعت کل دوبارہ ہوگی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں