The news is by your side.

اپوزیشن نے بھی وزیرِ اعظم کے کرتارپور بارڈر کھولنے کا اقدام خوش آئند قرار دے دیا

لاہور: وزیرِ اعظم عمران خان کے کرتارپور بارڈر کھولنے کے اقدام کی تعریف اپوزیشن بھی کرنے لگی، اپوزیشن نے اقدام کو خوش آئند قرار دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق اے آر وائی نیوز کے پروگرام آف دی ریکارڈ میں اپوزیشن سے تعلق رکھنے والے رہنماؤں نے کرتارپور راہ داری کھولے جانے کی کھل کر تعریف کی۔

کرتارپور بارڈر کھول کر پاکستان نے بہت اچھا پیغام دیا۔

خواجہ آصف پاکستان مسلم لیگ ن

سابق وزیرِ خارجہ خواجہ آصف نے کہا کہ پاکستان نے کرتارپور بارڈر کھول کر بڑا قدم اٹھایا ہے، ن لیگ بھی چاہتی ہے پاک بھارت تعلقات بہتر ہوں، کرتارپور راہ داری کھولنا اچھا اقدام ہے۔

مسلم لیگ ن کے راہنما نے مزید کہا کہ کرتارپور بارڈر کھول کر پاکستان نے بہت اچھا پیغام دیا ہے، ن لیگ اپنے عمل کے ذریعے دکھا چکی ہے کہ دونوں ممالک میں تعلقات بہتر ہوں۔

انھوں نے کہا کہ بھارت میں اپریل میں انتخابات ہیں، وہاں مذہبی کارڈ کھیلا جا رہا ہے، بھارتی وزیرِ اعظم مودی مذہبی کارڈ شدت سے کھیل رہے ہیں، لیکن مذہبی کارڈ کے نتائج خطرناک ثابت ہوتے ہیں۔


یہ بھی پڑھیں:  وزیراعظم عمران خان نے کرتارپورکوریڈور کا سنگ بنیاد رکھ دیا


پاکستان پیپلز پارٹی کی رہنما شازیہ مری نے کہا کہ وزیرِ اعظم عمرا ن خان کا کرتارپور بارڈر کھولنا اچھا اقدام ہے۔

بھارت کا رویّہ بہت افسوس ناک ہے۔

شازیہ مری پاکستان پیپلز پارٹی

شازیہ مری نے کہا کہ بھارت کا رویّہ بہت افسوس ناک ہے، پاکستان کی سیکورٹی فورسز کو سراہتی ہوں، کرتارپور بارڈر کھولنے کا خواب سیاسی قیادت پہلے سے دیکھتی آ رہی ہے۔

پی پی رہنما نے مزید کہا کہ پاکستان کی سویلین اور عسکری قیادت ایک پیج پر ہے جو خوش آئند ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ بے نظیر بھٹو نے 1988 میں کرتارپور بارڈر کھولنے کی بات کی تھی، انھوں نے ہمیشہ سافٹ بارڈرز کی بات کی، اسی طرح شملہ معاہدے کا کریڈٹ پیپلز پارٹی کو ملتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں