برطانیہ میں پاکستانیوں کی غیرمنقولہ جائیدادوں کے خلاف کارروائی کا آغاز unfair property
The news is by your side.

Advertisement

برطانیہ میں پاکستانیوں کی غیرمنقولہ جائیدادوں کے خلاف کارروائی کا آغاز

اسلام آباد: ایمنسٹی اسکیم سے فائدہ نہ اٹھانے والوں کے خلاف ایکشن، ایف بی آر نے برطانیہ میں پاکستانیوں کی غیر منقولہ جائیدادوں کے خلاف کارروائی شروع کردی۔

تفصیلات کے مطابق فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کی مدت پوری ہونے پر ہفتے کے روز برطانیہ اور دبئی میں جائیدادیں رکھنے والے پاکستانی شہریوں کو نوٹس جاری کیے تھے۔

چیئرپرسن ایف بی آر نے کہا کہ برطانوی ٹیکس اتھارٹی، ایچ ایم آر سی سے معلومات حاصل کرلیں، برطانیہ میں پاکستانیوں کی غیرمنقولہ جائیدادوں کے خلاف کارروائی کا آغاز کردیا گیا ہے۔

چیئرپرسن ایف بی آر رخسانہ یاسمین کا کہنا تھا کہ برطانیہ میں غیرمنقولہ جائیدادوں کے مالک پاکستانیوں کی معلومات برطانوی ٹیکس اتھارٹی سے لی گئی ہیں۔

ذرائع کے مطابق نوٹس میں پوچھا گیا ہے کہ جائیداد کب اور کس سے خریدی گئی؟ اور جس پیسے سے جائیداد خریدی گئی وہ پیسہ کہاں سے آیا؟ اس پیسے پر ٹیکس کا اطلاق تھا یا نہیں؟

واضح رہے کہ مسلم لیگ ن کے گزشتہ دور حکومت میں ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کا اعلان کیا گیا تھا، جس کے تحت بیرون ملک اثاثے رکھنے والوں کو 2 فیصد جرمانہ ادا کرکے اسکیم سے فائدہ اٹھانے کا موقع دیا گیا تھاْ۔

خیال رہے کہ نگراں وزیر خزانہ ڈاکٹر شمشاد اختر کا کہنا تھا کہ مالی اور کرنٹ اکاؤنٹ کا خسارہ تاریخ کی بلند ترین سطح پر ہے، آئی ایم ایف کے پاس نہیں جارہے اگر ایمنسٹی اسکیم نہ آتی تو خسارہ اور زیادہ ہوتا۔

ترجمان ایف بی آر کے مطابق ایمنسٹی اسکیم سے مجموعی طورملکی خزانے کو 110 ارب روپے کا ٹیکس حاصل ہوا جبکہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے 123 ارب روپے کی ٹیکس وصولی کا ہدف بنایا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں