The news is by your side.

Advertisement

اپوزیشن کا شور شرابا بے سود، سندھ کا بجٹ منظور

کراچی: اپوزیشن اراکین نعرے لگاتے رہے ، شور مچاتے رہے، سندھ اسمبلی نے آئندہ مالی سال کیلئے ایک سو چھپن مطالبات زر کی ایک منٹ میں منظوری دے دی۔

تفصیلات کے مطابق اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کی زیر صدارت سندھ اسمبلی کا اجلاس ہوا، جس میں وزیراعلیٰ مراد علی شاہ نے بطور صوبائی وزیر خزانہ بجٹ کے مطالبات زرپیش کیے۔

اپوزیشن کے شور شرابے اور ہلڑبازی کا جواب دینے کی حکمت عملی کے تحت حکومتی اراکین وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کے گرد حصار بنایا اور بجٹ تجاویز منظوری کیلئے پیش کیں جن کو ایوان نے کثرت رائے سے منظور کیا۔اجلاس کے دوران اپوزیشن کی جانب سے سوائے احتجاج کے کچھ نہیں کیا گیا، اپوزیشن نے نہ تو بجٹ بحث میں حصہ لیا اور نہ ہی کٹوتی کی تحاریک پیش کیں، یہی وجہ تھی کہ سندھ اسمبلی نے آئندہ مالی سال کیلئے ایک سو چھپن مطالبات زر کی ایک منٹ میں منظوری دے دی۔

صوبائی بجٹ پر وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی تقریر کے دوران اپوزیشن کی جانب سے احتجاج اور صوبائی حکومت کے خلاف شدید نعر ہ بازی کی گئی۔

یہ بھی پڑھیں: سندھ بجٹ: سرکاری ملازمین کے لئے بڑی خوشخبری

واضح رہے کہ رواں ماہ کی پندرہ تاریخ کو سندھ حکومت نے آئندہ مالی سال 22-2021 کیلئے 1477.903ارب روپے کا سندھ بجٹ پیش کیا تھا، بجٹ میں خسارے کا تخمینہ 25،738 ارب تھا۔

وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ آئندہ مالی سال کیلئے کل تخمینہ1452،168 ارب روپے ہے جبکہ صوبے کی اپنی وصولیاں 329،319 ارب روپے متوقع ہیں۔

 

Comments

یہ بھی پڑھیں