تاریخی عمارتیں‘ اورنج لائن کی زدمیں، عدالت نےجواب طلب کرلیا -
The news is by your side.

Advertisement

تاریخی عمارتیں‘ اورنج لائن کی زدمیں، عدالت نےجواب طلب کرلیا

لاہور: ہائی کورٹ نے اورنج لائن میٹرو ٹرین منصوبے کی زد میں آنے والی تاریخی عمارتوں کے تحفظ کے بارے میں پنجاب حکومت سے تفصیلی جواب مانگ لیا ہے، یونیسکو کی جانب سے بھی حکومت پاکستان کو شالامار باغ کے قریب زیر تعمیر اورنج لائن منصوبہ روکنے کی شفارش کردی۔

لاہورہائی کورٹ کے جسٹس عابد عزیز شیخ کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے درخواستوں پر سماعت کی، درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ عالمی ادارے اورنج لائن میٹروٹرین منصوبے کی زد میں آنے والی تاریخی عمارتوں کے لئے اسے خطرہ قرار دے رہے ہیں، حکومت نے تاریخی عمارتوں کے حوالے سے نظر ثانی این او سی جاری بھی کیا ہے۔

درخواست گزار کے مطابق یونیسکو نے شالامار باغ کے تحفظ کے لئے اجلاس بلایا اور تاریخی عمارتوں کی حفاظت کے لئے سفارشات مرتب کی ہیں۔

یونیسکو رپورٹ کے مطابق اورنج لائن منصوبے کی وجہ سے شالامار باغ کو شدید خطرات لاحق ہیں، اورنج لائن صرف 12میٹرکے فاصلے پرتعمیر کیا جارہا ہے جس کی وجہ سے باغ کو ناقابل تلافی نقصان پہنچ رہا ہے جبکہ عالمی ورثے کی حفاظت کے لیے بھی خاطر خواہ انتظامات نہیں کیے گئے۔

حکومت پاکستان کو پہلے بھی شالامار باغ کو پہنچنے والے خطرات کے حوالے سے آگاہ کیا گیا ۔ یونیسکو کی جانب سے حکومت پاکستان سے شالامار باغ کی حفاظت کے لیے کئے گئے اقدامات کی بھی رپورٹ طلب کرلی ہے۔

عدالت نے استفسار کیا کہ حکومت بتائے کہ یونیسکو کی سفارشات پر کیسے عمل کیا جائے گا؟ عدالت نے یہ بھی سوال اٹھایا کہ اگر یونیسکو نے منصوبے کا روٹ تبدیل کرنے کا کہا تو پھر حکومت کیا کرے گی۔

عدالت نے تاریخی عمارتوں کے تحفظ کے بارے میں پنجاب حکومت کو تفصیلی جواب دینے کا حکم دیا اوردرخواستوں پر مزید کارروائی ملتوی کردی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں