The news is by your side.

Advertisement

منحرف ارکان کی 5 سال نااہلی کا آرڈیننس تیار نہیں ہوا، اٹارنی جنرل

اٹارنی جنرل خالد جاوید خان نے کہا ہے کہ منحرف ارکان کو 5 سال نااہل کرنے کا آرڈیننس تیار نہیں ہوا بلکہ صرف آرٹیکل 63 اےکی تشریح کیلئے عدالت سے رجوع کرنے کا فیصلہ ہوا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق اٹارنی جنرل خالد جاوید نے کہا ہے کہ منحرف ارکان کو 5 سال نااہل کرنے کا آرڈیننس تیار نہیں ہوا بلکہ صرف آرٹیکل 63 اےکی تشریح کیلئے عدالت سے رجوع کرنے کا فیصلہ ہوا ہے۔

خالد جاوید نے کہا کہ وزارت قانون کوشایدکوئی غلط فہمی ہوئی ہے، 5سال نااہلی کااٹارنی جنرل آفس میں کوئی آرڈیننس نہیں بنایا گیا ہے۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ آرٹیکل186کےتحت صدارتی ریفرنس پر عدالت سے رائے کا فیصلہ ہوا اور صدارتی ریفرنس جلددائرکردیاجائےگا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل ایڈوکیٹ جنرل اسلام آباد نیاز اللہ نیازی نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ سے رائے لیں گے کہ وفاداریاں تبدیل کرنے پر نااہلی زندگی بھر کی ہوگی یا نہیں؟

مزید پڑھیں: ’’وفاداریاں تبدیل کرنے پر نااہلی، سپریم کورٹ سے رائے لیں گے‘‘

ایڈوکیٹ جنرل نے اے آر وائی نیوز سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا تھا کہ پی ٹی آئی کے منحرف ارکان کے خلاف قانونی کارروائی آئین میں موجود ہے، منحرف ارکین کیخلاف الیکشن کمیشن کو نوٹس لینا چاہیے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں