The news is by your side.

Advertisement

پنجاب اسمبلی میں جماعت اسلامی بنگلادیش کے رہنماؤں کو ’نشانِ پاکستان‘ دینے کا مطالبہ

لاہور: پنجاب اسمبلی میں آج دو قراردادیں منظور کی گئیں جن میں سے ایک ملک ہمیں ہونے والے ڈرون حملوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا جبکہ دوسری قرارداد میں بنگلادیش میں جماعت اسلامی کے پھانسی پانے والے رہنماؤں کو نشانِ پاکستان سے نوازنے کا مطالبہ کیا ہے۔

ڈرون حملوں کے خلاف قرارداد پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور پبجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید نے پیش کی۔

قرار داد میں پاکستان میں ہونے والے ڈرون حملوں کی مذمت کی گئی اور کہا گیا کہ یہ حملے قومی خودمختاری کے خلاف ہیں۔ قرارداد میں وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ اس معاملے پر امریکہ سے احتجاج کیا جائے اورقومی رہنماؤں کا اجلاس طلب کرکے آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائے۔

دوسری جانب بنگلا دیش میں جماعت اسلامی کے رہنماؤں کی پھانسی کے خلاف پاکستان مسلم لیگ ن کے ممبر صوبائی اسمبلی علاؤ الدین شیخ نے قرارداد پیش کی۔

قرارداد میں کہا گیا ہے کہ جماعت اسلامی بنگلادیش کے رہنماؤں کو پاکستان کی حمایت کی سزا دی جارہی لہذا انہیں نشانِ پاکستان ایوارڈ سے نوازا جائے۔

بنگلا دیش کی موجودہ حکومت چن چن کر پاکستان کی حمایت کرنے والے جماعت اسلامی کے رہناؤں کو جنگی جرائم کے الزام میں تختہ دار کے حوالے کررہی ہے جن میں حالیہ سزا مطیع الرحمان نامی رہنما کو دی گئی جو کہ بنگلا دیش میں زراعت اور انڈسٹریز کی وزارتوں پر فائز رہ چکے تھے۔

واضح رہے کہ ہفتے کے روز بلوچستان کے علاقے نوشکی میں ہونے والے ڈرون حملے میں افغان طالبان کے امیر ملا اختر منصور مبینہ طورپر مارا گیا تھا۔

پاکستان اس سےقبل بھی ڈرون حملوں کے معاملے پرامریکہ سے احتجاج کرچکا ہے، پاکستان کا موقف ہے کہ ڈرون حملوں کے نتیجے میں دہشت گردوں سے زیادہ عام شہری مارے جاتے ہیں۔
لاہور: پنجاب اسمبلی میں آج دو قراردادیں منظور کی گئیں جن میں سے ایک ملک ہمیں ہونے والے ڈرون حملوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا جبکہ دوسری قرارداد میں بنگلادیش میں جماعت اسلامی کے پھانسی پانے والے رہنماؤں کو نشانِ پاکستان سے نوازنے کا مطالبہ کیا ہے۔

ڈرون حملوں کے خلاف قرارداد پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور پبجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید نے پیش کی۔

قرار داد میں پاکستان میں ہونے والے ڈرون حملوں کی مذمت کی گئی اور کہا گیا کہ یہ حملے قومی خودمختاری کے خلاف ہیں۔ قرارداد میں وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ اس معاملے پر امریکہ سے احتجاج کیا جائے اورقومی رہنماؤں کا اجلاس طلب کرکے آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائے۔

دوسری جانب بنگلا دیش میں جماعت اسلامی کے رہنماؤں کی پھانسی کے خلاف پاکستان مسلم لیگ ن کے ممبر صوبائی اسمبلی علاؤ الدین شیخ نے قرارداد پیش کی۔

قرارداد میں کہا گیا ہے کہ جماعت اسلامی بنگلادیش کے رہنماؤں کو پاکستان کی حمایت کی سزا دی جارہی لہذا انہیں نشانِ پاکستان ایوارڈ سے نوازا جائے۔

بنگلا دیش کی موجودہ حکومت چن چن کر پاکستان کی حمایت کرنے والے جماعت اسلامی کے رہناؤں کو جنگی جرائم کے الزام میں تختہ دار کے حوالے کررہی ہے جن میں حالیہ سزا مطیع الرحمان نامی رہنما کو دی گئی جو کہ بنگلا دیش میں زراعت اور انڈسٹریز کی وزارتوں پر فائز رہ چکے تھے۔

واضح رہے کہ ہفتے کے روز بلوچستان کے علاقے نوشکی میں ہونے والے ڈرون حملے میں افغان طالبان کے امیر ملا اختر منصور مبینہ طورپر مارا گیا تھا۔

پاکستان اس سےقبل بھی ڈرون حملوں کے معاملے پرامریکہ سے احتجاج کرچکا ہے، پاکستان کا موقف ہے کہ ڈرون حملوں کے نتیجے میں دہشت گردوں سے زیادہ عام شہری مارے جاتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں