جنگ کے لیے تیار ہیں، لیکن امن کی طرف چلنا چاہتے ہیں: ڈی جی آئی ایس پی آر -
The news is by your side.

Advertisement

جنگ کے لیے تیار ہیں، لیکن امن کی طرف چلنا چاہتے ہیں: ڈی جی آئی ایس پی آر

راولپنڈی : پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ کسی نے ہمارے صبر کا امتحان لیا تو پاک فوج قوم کو مایوس نہیں کرے گی، پاکستان جنگ کیلئے تیار ہے۔

یہ بات انہوں نے بھارتی آرمی چیف کے حالیہ بیان پر اپنے ردعمل میں کہی اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ پاکستان ایٹمی قوت ہے اور جنگ کیلئے تیار ہے، ہم خطےمیں امن کےخواہاں ہیں لیکن ہماری امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھا جائے۔

پاکستان نے کامیابی کے ساتھ دہشت گردی کا مقابلہ کیا، میجر جنرل آصف غفور نے بھارتی آرمی چیف کے بیان پر کہا کہ بھارتی آرمی چیف کا بیان انتہائی غیر ذمہ دارانہ ہے، بھارتی فوج اپنی ملکی سیاست میں گھری ہوئی ہے، پاکستان ایٹمی قوت ہے اور جنگ کیلئے تیار ہے،کسی بھی قسم کی کارروائی ہوئی تو پاکستان اس کا بھرپورجواب دے گا۔

ڈی جی آئی ایس پی آر کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان کو دہشت گردی کا شکار بنایا گیا لیکن پاک فوج نے لازوال قربانیاں دے کر ملک میں امن وامان قائم کیا، ہم خطےمیں امن کےخواہاں ہیں، کسی کو امن وامان کی صورتحال خراب نہیں کرنے دینگے، خطے میں امن ہوگا تو پاکستان اور دیگر ممالک بھی ترقی کرینگے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی حکومت نے اب بھی مذاکرات کی دعوت دی ہے جبکہ بھارت ہمیشہ مذاکرات سے بھاگا ہے، بھارتی فوج سرجیکل اسٹرائیک کا جواب اپنی پارلیمنٹ میں اب تک نہیں دے سکے، بھارتی فوج توجہ ہٹانے کیلئے جنگ کی طرف رخ موڑ رہی ہے، پاکستان کسی بھی مس ایڈونچر کا جواب دینے کو تیار ہے، بھارتی آرمی چیف امن وامان کی صورتحال خراب نہ کریں، ہم جنگ کی تیاری پوری رکھ کر امن کی جانب بڑھ رہے ہیں۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ بھارت کی موجودہ حکومت پر کرپشن کے بہت سے چارجز ہیں، بھارت میں آزادی کی تحریکیں بھی چل رہی ہیں، بھارتی فوج آج تک اپنی پارلیمنٹ میں اسٹرائیک کے ثبوت تک نہیں دے سکی،
لہٰذا بھارت ایسی حرکت نہ کرے جس سے اسے خود بھی نقصان اٹھانا پڑے۔

میجرجنرل آصف غفور کا کہنا تھا کہ بھارتی فوج نے بی ایس ایف سولجر کی بےحرمتی کا جھوٹا الزام لگایا تھا، پاکستان کے عوام کی خاطر امن کے راستے پر چلنا چاہتے ہیں، پاکستان پوری دنیا میں مثبت رویے کے ساتھ آگے بڑھ رہا ہے، بھارت کو سمجھنا چاہئے کہ امن کو خراب نہیں کرنا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں