The news is by your side.

Advertisement

میرے دو بیٹے پاک فوج میں تھے، ایک نے جام شہادت نوش کیا، والد شہید نائیک خرم علی

نائیک خرم علی شہید کو فوجی اعزاز کے ساتھ سپرد خاک کردیا گیا

ڈیرہ غازی خان: لائن آف کنٹرول کے نکیال سیکٹر پر بھارتی فوج کی فائرنگ سے شہید ہونے والے نائیک خرم علی کو فوجی اعزاز کے ساتھ سپرد خاک کردیا گیا،  والد کا کہنا ہے کہ دو بیٹے فوج میں ہیں ایک شہید ہوگیا دوسرا بھی وطن کی خاطر جام شہادت نوش کرے تو فخر ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق دو روز قبل نکیال سیکٹر پر وطن عزیز کا دفاع اور بھارتی فوج کی سازشوں کو ناکام بناتے ہوئے پاک فوج کے دو جوان شہید ہوگئے تھے۔ شہید نائیک خرم علی نے پسماندگان میں 2 بیٹے اور ایک بیٹی چھوڑی ہے۔

نائیک خرم علی شہید کے والد کا کہنا تھا کہ میرے 2 بیٹے پاک فوج میں تھے ایک نے جام شہادت نوش کیا اور دوسرا وطن کی سرحدوں کی حفاظت کررہا ہے۔

اُن کا کہنا تھا کہ میرادوسرا بیٹابھی وطن کی خاطرشہیدہوجائےتو فخر ہوگا، وطن عزیز کےدفاع کی خاطر میری بھی جان حاضر ہے۔

مزید پڑھیں: ڈی جی خان: پاک فوج کے شہید حوالدارعبدالرب کی نمازجنازہ ادا

یاد رہے کہ دو روز قبل لائن آف کنٹرول پر بھارتی فائرنگ سے شہید ہونے والے پاک فوج کے شہید حوالدار عبدالرب کی تدفین فوجی اعزاز کے ساتھ گزشتہ روز ڈیرہ اسماعیل خان میں کی گئی تھی۔

پاک فوج کے دونوں جوان لائن آف کنٹرول پر واقع نکیال سیکٹر پر بھارتی فائرنگ سے شہید ہوئے تھے۔ حوالدار عبدالرب کے  نماز جنازہ میں پاک فوج کے افسران، ضلعی انتظامیہ سمیت شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ ایل اوسی پرفائرنگ وگولہ باری کے نتیجے میں 2 پاکستانی شہری بھی شہید ہوئے تھے۔

آئی ایس پی آر کے مطابق شہید ہونے والے دونوں جوان شہری آبادی پرفائرنگ کے جواب میں بھارتی چوکیوں کو نشانہ بنا رہے تھے۔

یہ بھی پڑھیں: بھارتی فوج کی بلااشتعال فائرنگ، پاک فوج کے 2 جوان شہید

واضح رہے 27 فروری کو پاک فضائیہ نے سرحدی حدود کی خلاف ورزی کرنے والے 2 بھارتی طیارے مار گرائے تھے اور ایک بھارتی پائلٹ کو گرفتار کرلیا تھا۔

آئی ایس پی آر کے سربراہ میجر جنرل آصف غفور کے مطابق بھارت کے 2 طیارے لائن آف کنٹرول کے اطراف میں گر کر تباہ ہوئے، ایک طیارہ بھارتی مقبوضہ کشمیر کے علاقے بڈگام میں گرا، جبکہ دوسرا طیارہ پاکستان کی جانب گرا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں