The news is by your side.

Advertisement

بھارتی فوج کی ایل او سی پر بلااشتعال فائرنگ ، پاک فوج کے جوان سمیت 2 شہری شہید

راولپنڈی : بھارتی فوج نے لائن آف کنٹرول(ایل او سی) پر سیزفائر کی خلاف ورزی کرتے ہوئے کیلراور رکھ چکری سیکٹرزپربلااشتعال فائرنگ کی ، جس کے نتیجے میں لانس نائیک سمیت خاتون اوربچی شہیدہوگئی، پاک فوج کی جوابی کارروائی بھارتی فوج کو بھاری جانی نقصان ہوا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی فوج کی لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزیوں کاسلسلہ جاری ہے، تفصیلات کے مطابق پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل بابر افتخار نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر کہا کہ بھارتی فوج نے رات کے اندھیرے میں کیلر اور رکھ چکری سیکٹرز  پر بلااشتعال فائرنگ کی اور پاک فوج کی چوکیوں کونشانہ بنایا۔

آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ پاک فوج کی جوابی کارروائی میں بھارتی فوج کوبھاری جانی نقصان ہواہے جبکہ فائرنگ کےتبادلےمیں 34 سالہ لانس نائیک علی باز شہید ہوگیا،جس کاتعلق کرک سے تھا۔

ترجمان کے مطابق بھارتی فوج کی شہری آبادی پر فائرنگ سے 16 سالہ لڑکی اور 52 سالہ خاتون بھی شہید جبکہ 10سالہ بچہ اور 55 سالہ خاتون زخمی ہوئی ہیں۔

گذشتہ روز لائن آف کنٹرول(ایل او سی) پر سیز فائر کی مسلسل خلاف ورزی پر پاکستان نے سینئربھارتی سفارت کار کو دفترخارجہ طلب کرکے شدید احتجاج ریکارڈ کرایا تھا۔

یاد رہے ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے بھارتی فوج کی ایل او سی پر جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی پر گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ بھارتی فوج کی جندروٹ، کھوئی رٹہ سیکٹر کی شہری آبادی پر فائرنگ کی ہے جس کے نتیجے میں 36 سالہ یاسمین بی بی شہید اور 8 سالہ عطیہ ظہیر زخمی ہوگئی۔

ڈی جی آئی ایس پی کا کہنا تھا کہ مودی کو اقتدار ملنے سے ہندو توا، سیفران دہشتگردی بھارت میں انتہا پر پہنچ گئی ہے، مودی نے آر ایس ایس کے انتہا پسند نظریے، تشدد کی پالیسی کو سرحد پار تک پھیلا دیا۔

انہوں نے کہا تھا کہ ایل او سی پر جنگ بندی کی خلاف ورزی کا بھارتی ٹریک ریکارڈ بدتر ہوتا جارہا ہے، 2015 میں بھارت نے جنگ بندی کی 248 خلاف ورزیاں کیں اور 39 شہریوں کو شہید جبکہ 152 کو زخمی کیا۔

میجر جنرل بابر افتخار نے پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ 2016 میں 382 خلاف ورزیو کی صورت میں 46 پاکستانی شہری شہید، 150 زخمی ہوئے جبکہ 2017 میں 1881 مرتبہ بھارتی فوجیوں نے جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کی اور 53 افراد کو شہید جبکہ 256 کو زخمی کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ لائن آف کنٹرول پر 2018 میں سیز فائر کی خلاف ورزیاں 3038 تک پہنچ گئیں اور شہری آبادی کو نشانہ بنانے کی بھارتی روش 58 جانیں لے گئی۔

میجر جنرل افتخار نے کہا تھا کہ 2018 میں ایل او سی کے قریب رہنے والے 319 افراد زخمی بھی ہوئے، گزشتہ 6 سال میں 2019 میں زیادہ 3351 مرتبہ بھارت نے سیز فائر کی خلاف ورزی کی اور 2019 میں بھارتی فائرنگ سے 52 افراد شہید، 261 زخمی ہوئے جبکہ 2020 میں بھی امن کے دشمن بھارت، مودی مذموم عزائم جاری رکھے ہوئے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں