site
stats
سندھ

رواں سال ٹارگٹ کلنگ میں 91 فی صد کمی آئی، ترجمان رینجرز

کراچی : ترجمان رینجرز کے مطابق رواں سال کراچی میں جرائم کے خلاف 1992آپریشن کیے گئے اور 2847 ملزمان کو حراست میں لیا گیا جب کہ مختلف اقسام کے 1845 ہتھیار برآمد کیے گئے۔

مذکورہ اعداد و شمار پاکستان رینجرز نے کراچی آپریشن کے سندھ رینجرز کی کارکردگی بیان کرتے ہوئے پیش کیے جس کے تحت مختلف کالعدم جماعتوں سے تعلق رکھنے والے350 دہشتگردوں کو گرفتار کیا گیا جب کہ سیاسی جماعت کے عسکری ونگ سے تعلق رکھنے والے348 ملزمان کو گرفتار کیا،فرقہ وارانہ تنظیم کے 11، لیاری گینگ وار پیپلزامن کمیٹی کے 87 کارندوں کو گرفتار کیا گیا۔

اس کے علاہ مختلف کاروائیوں میں446 ٹارگٹ کلرز، 72 بھتہ خوروں، 26 اغواء برائے تعاون کے ملزمان،کو بھی گرفتار کیا گیا اور 13 مغویوں کو بازیاب کرایا جب کہ دہشت گردوں سے مقابلے کے دوران5رینجرز اہلکار زخمی بھی ہوئے۔

جب کہ چھاپہ مارکارروائیوں میں رینجرز نے 10راکٹ لانچر، 50ہیوی لائٹ مشین گن، 358 کلاشنکوف، 90شارٹ گن، 112ریپیٹر، 315رائفل، 910پستول، 166دستی بم، 1دھماکا خیز ڈیوائس اور12کلو گرام دھماکا خیز مواد، 26واکی ٹاکی، 190بلٹ پروف جیکٹ، 36ڈیٹونیٹرز، 18آر پی جی اور 7راکٹس برآمد کیئے۔

یہ اسلحہ چھاپے مار مارروائیوں کے دوران سیاسی جماعت کے عسکری ونگ، فرقہ ورانی تنظیموں، لیاری گینگ وار اور کالعدم جماعتوں کے دفاتر اور خفیہ مقامات سے برآمد کیئے ہیں۔

پاکستان رینجرز جاری کردہ اعداد و شمار میں جرائم کی شرح تناسب بھی بیان کی گئی ہے ، تقابلی گوشوارے کے مطابق 2013سے لیکر2016 تک دہشت گردی کی کاروائی میں72فیصد کمی آئی ہے جب کہ ٹارگٹ کلنگ میں91فیصد،بھتہ خوری میں93فیصد اوراغواء کے کیسز میں96فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top