The news is by your side.

Advertisement

پاکستان کے روس سے سخوئی ایس یو35 کی فراہمی کے لئے مذاکرات

اسلام آباد:  ایم آئی پیتیس ہیلی کاپٹروں کے بعد اب روس پاکستان کو جدید ترین لڑاکا طیارے سخوئی ایس یو پینتیس بھی فراہم کر رہا ہے۔

پاکستان اور روس کے درمیان جدید جنگی طیارے سخوئی ایس یو پینتیس کی فراہمی کے معاہدے کے لئے مذکرات جاری ہیں، روسی ذرائع ابلاغ کے مطابق پاکستان کو لڑاکا طیارے فراہم کرنے کا اعلان روس کے نائب وزیر خارجہ سرگئی ریبکوف نے کیا۔

سخوئی طیارہ سپر فلینکر کے نام سے بھی جانا جاتاہے، ایس یو35 فور ڈبل پلس کیٹیگری کے کثیر جہتی صلاحیتوں کے حامل طیارے ہیں، ایس یو 35لڑاکا طیارے ففتھ جنریشن کے ایس یو 27جنگی طیاروں کی جدید خصوصیات رکھتے ہیں، ان جنگی طیاروں کی پہلی آزمائش2011میں کی گئی اور 2012میں اسے روسی فضائیہ میں شامل کیا گیا، روس نے پچھلے سال پاکستان کو ہتھیاروں کی فروخت پر عائد پابندی اٹھالی تھی۔

اس سے قبل پاکستان روس سے چار ایم آئی تھرٹی فائیو جنگی ہیلی کاپٹر کی خریداری کا کامیاب معاہدہ کر چکا ہے، پاکستان روس سے چار ایم آئی تھرٹی فائیو ہیلی کاپٹر خرید رہا ہے۔ پاکستان اور روس کے درمیان دفاعی تکنیکی تعاون کا معاہدہ ہو چکا ہے اور آئی تھرٹی فائیو جنگی ہیلی کاپٹر اسی معاہدے کے تحت حاصل کیے جارہے ہیں، میڈ اِن رشیا۔

ایم آئی تھرٹی فائیو گن شپ ہیلی کاپٹر بھی ہے، جو ہدف پر حملے کی صلاحیت رکھتا ہے، جنگی ہیلی کاپٹر کافی بڑا ہے اور اس میں آٹھ افراد کے بیٹھنے کی گنجائش ہوتی ہے، ایم آئی تھرٹی فائیو ہیلی کاپٹر کو ہائی ہِنڈ کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ ایم آئی تھرٹی فائیو تین سو پینتیس میل فی گھنٹہ کی رفتار سے پرواز کر سکتا ہے، ایک ہیلی کاپٹر کی مالیت تقریبا سوا کروڑ ڈالر ہے۔

پاکستان اور روس کے درمیان دفاعی تعاون کے دوطرفہ معاہدے کے بعد آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے حالیہ دورہ ماسکو میں جنگی ہتھیاروں کا عملی مظاہرہ بھی دیکھا تھا۔ آرمی چیف جنرل راحیل شریف کے دورہ ماسکو کے بعد دفاعی طور پر پاکستان اور روس کافی قریب آچکے ہیں۔

 

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں