The news is by your side.

Advertisement

دھرنا نزدیک آتے ہی، اسلام آباد میں فوج کے اختیارات میں 90 روز کی توسیع

اسلام آباد: حکومت نے دھرنا نزدیک آتے ہی آرٹیکل 245 کے تحت اسلام آباد میں تعینات فوج کے خصوصی اختیارات میں تین ماہ کا اضافہ کرتے ہوئے حساس مقامات کی حفاظت کے لیے پاک فوج کے جوانوں کو تعینات کردیا۔


اطلاعات کے مطابق تحریک انصاف کے دھرنے سے نمٹنے کے لیے حکومت کی پھرتیاں سامنے آگئیں، حکومت نے اسلام آباد میں فوجی کے خصوصی اختیارات میں توسیع کا خط جاری کردیا ، یہ نوٹی فکیشن 23 اگست سے تیار تھا لیکن جاری آج 26 اکتوبر کو کیا گیا۔

نمائندہ اسلام آباد ذوالقرنین حیدر کے مطابق دھرنا نزدیک آتے ہی حکومت کو فوج کے خصوصی اختیارات میں اضافہ کرنے کا خیال آگیا،اسلام آباد میں فوج کے خصوصی اختیارات اگست میں ختم ہوچکے تھے، سمری ارسال کیے جانے کے باوجود حکومت ٹال مٹول سے کام لے رہی تھی لیکن دھرنا آیا تو حکومت نے پچھلی تاریخوں کا لیٹر جاری کرتے ہوئے فوج کے اختیارات میں توسیع کردی۔

فوج کے اختیارات میں تین ستمبر سے تین دسمبر تک 90 روز کی توسیع کی گئی ہے، 23 اگست کو تیار کیے جانےوالا نوٹی فکیشن دو ماہ اور تین دن بعد آج جاری کیا گیا لیکن اس میں تاریخ وہی رکھی گئی ہے۔

اطلاعات ہیں کہ لیٹر جاری کرنے کا مقصد دھرنے کے شرکا کو یہ باور کرانا ہے کہ اسلام آباد میں فوج تعینات ہوگی۔

اے آر وائی نیوز کے اینکر پرسن ارشد شریف کے مطابق آرٹیکل 245 کے تحت افواج پاکستان سے کہا گیا ہے کہ اسلام آباد میں موجود حساس عمارات کی سیکیورٹی فوج کے حوالے کی گئی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ انٹیلی جنس بیورو کو ٹاسک دیا گیا ہے کہ اسلام آباد کے تعلیمی اداروں میں موجود تحریک انصاف کے حامی طالب علموں کا ڈیٹا جمع کیا جائے اسلام آباد لاک ڈائون روکنے کے لیے انہیں حراست میں لے لیا جائے ساتھ ہی دھرنے کی حامی دیگر جماعتوں کے رہنمائوں اور کارکنوں کو بھی گرفتار کیا جائے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں