site
stats
پاکستان

پاک ترک اسکولزکو فاؤنڈیشن کے حوالے کرنا ناقابل قبول ہے، والدین

لاہور : حکومت پاکستان اور پاک ترک اسکولز کی انتظامیہ کے مابین تنازعہ نے ہزاروں طلبہ کے مستقبل کو داؤ پر لگا دیا ہے۔

اسکول انتظامیہ اور والدین نے اس حوالے سے لاہور میں مشترکہ پریس کانفرنس کی جس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت پاک ترک اسکولز کو کسی اور فاؤنڈیشن کے حوالے کرنا چاہتی ہے جو کہ ناقابل فہم اور ناقابل قبول ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ترکی کے حالات کی وجہ سے پاک ترک اسکولز کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے، حکومت فوری طور پراسکولوں کی انتظامیہ کی تبدیلی کا ارادہ ختم کرے۔

مقررین نے کہا کہ اسکولوں کو مخصوص دہشت گردانہ سرگرمیوں سے جوڑنا طلباء اور والدین کے لیے پریشانی اور شرمندگی کا باعث بن رہا ہے۔

مزید پڑھیں : ترک وزیرخارجہ کی وزیراعظم نوازشریف سے ملاقات

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں پاکستان کے دورے پر آئے ہوئے ترک وزیر خارجہ مولود چاوش اوغلو نے وزیراعظم نوازشریف سے ملاقات کی تھی۔

ملاقات میں دیگر امور کے علاوہ جلاوطن ترک مبلغ فتح اللہ گولن کی تنظیم کے حوالے سے بھی بات چیت کی گئی تھی، ترک وزیر خارجہ کے مطابق عبداللہ اوغلان کے ادارے ہر ملک کے لیے خطرہ ہیں، امید ہے پاکستان اس سلسلے میں اقدامات کرے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ جلاوطن ترک مبلغ فتح اللہ گولن کی تنظیم ہر اس ملک کے لیے خطرہ ہے جہاں اس کی موجودگی ہے۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top