The news is by your side.

Advertisement

پاکستان کو دنیا کاچوتھا مہنگا ترین ملک کس بنیاد پر قرار دیا گیا؟ سوال اٹھ گئے

اسلام آباد: وزارت خزانہ نے اکانومسٹ کی عالمی افراط زر رپورٹ پر سوالات اٹھا دیے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وزارت خزانہ نے برطانوی میگزین دی اکانومسٹ کی عالمی افراط زر کی رپورٹ پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا ہے کہ زیادہ مہنگائی والے ممالک کی فہرست کن بنیادوں پر تیار کی گئی ہے؟

وزارت خزانہ نے یہ سوال اٹھایا کہ پاکستان کو دنیا کاچوتھا مہنگا ترین ملک کس بنیاد پر قرار دیا گیا؟ وینزویلا میں 1946، سوڈان میں 366، لبنان میں 138 فی صد مہنگائی ہے، جب کہ دی اکانومسٹ کی تیار کی گئی فہرست میں پاکستان 8.98 فی صد مہنگائی کے ساتھ 30 ویں نمبر پر ہے۔

وزارت خزانہ نے سوال اٹھایا کہ میگزین نے آخر کن بنیادوں پر پاکستان کو چوتھا مہنگا ترین ملک قرار دیا۔

وزارت کا کہنا تھا حکومت نے کرونا اثرات پر قابو کے لیے کئی معاشی اقدامات کیے، گندم 1950 روپے فی من ، چینی 90 روپے فی کلو پر فراہم کی، احساس پروگرام میں 1 کروڑ 48 لاکھ خاندانوں میں 179.3 ارب روپے تقسیم کیے گئے۔

وزارت کی جانب سے کہا گیا کہ ملک میں زراعت کو تقویت دینے کے لیے 277 ارب روپے پر مبنی ایمرجنسی پروگرام دیا گیا، جب عالمی منڈی میں برینٹ 85 ڈالر فی بیرل ہوا تو پاکستان میں حکومتی ٹیکسز کی شرح کم کی گئی۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز معروف بین الاقوامی جریدے دی اکانومسٹ نے 43 ممالک میں مہنگائی کے اعداد و شمار جاری کیے تھے، دی اکانومسٹ کی رپورٹ کے مطابق ‎مہنگائی کے اعتبار سے پاکستان دنیا کے 43 ممالک میں چوتھے نمبر پر ہے، پاکستان میں گزشتہ ماہ مہنگائی کی شرح 9 فی صد رہی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں