The news is by your side.

Advertisement

پاکستان اور ایران مسافر ٹرین چلانے پر متفق

اسلام آباد: پاکستان اور ایران نے مسافر ٹرین کے دوبارہ آغاز پر اتفاق کرلیا، سروس کا آغاز محرم سے قبل کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں پاکستان اورایران کےمشترکہ ماہرین کمیٹی کااجلاس منعقد ہوا، ایران کے وفد کی سربراہی ڈی جی زاہدان ریلویز ماجد ارجونی نے کی۔

اجلاس کے دوران دونوں ممالک نے مسافر ٹرین کے دوبارہ آغاز پر مشاورت کی جس میں یہ تجویز سامنے آئی کہ سروس محرم سے قبل شروع کی جائے، دونوں ممالک کے وفود ٹرین سروس کے جلد آغاز پر متفق ہوگیے۔

ترجمان ریلوے کے مطابق سروس کی بحالی کا فیصلہ سیکیورٹی حالات بہتر ہونے پر کیا گیا، مسافر ٹرین ایران کے شہر مشہد اور قم کے لیے چلائی جائے گی، سروس کے آغاز کی حتمی تاریخ کا اعلان ایران کی مشاورت سے ہوگا۔

مزید پڑھیں: پاک ایران سرحدی تنازعات ختم کرنے پر دونوں ممالک رضامند

ریلوے ترجمان کے مطابق پاکستان اور ایران نے تجارتی سرگرمیوں کی بحالی کے لیے مال بردار گاڑیاں چلانے کا بھی فیصلہ کیا، ابتدائی طور پر 15 مال بردار گاڑیاں کوئٹہ سے زاہدان تک چلائی جائیں گی۔

دونوں ممالک کے وفود نے اس بات پر بھی اتفاق کیا کہ سیکیورٹی حالات کی بہتری کے بعد دونوں ممالک کے درمیان کارگو سروس کا آغاز بھی کیا جائے گا علاوہ ازیں ایم ایل تھری روٹ کی اپ گریڈیشن 2018 میں مکمل کرنے پر اتفاق کیا گیا۔

اجلاس میں ایران سے ایل پی جی کی درآمد ٹرین سروس کے ذریعے کرنے کی تجویز بھی سامنے آئی اور طے پایا کہ دونوں ممالک تجارتی فروغ کےلیے خصوصی رعایت بھی کریں گے۔

اسے بھی پڑھیں: ایرانی زائرین کے لیے پاک ایران فیری سروس مارچ سے شروع ہوگی

دورانِ اجلاس اسلام آباد، تہران، استنبول ٹرین سروس اور تافتان روڈ کی اپ گریڈیشن پر بھی اتفاق کیا گیا۔

واضح رہے کہ پاکستان سے زائرین کی بڑی تعداد زمینی راستے کے ذریعے ہر سال ایران پہنچتی ہے، ٹرین سروس کی بحالی کے بعد زائرین کی مشکلات میں کافی حد تک کمی ہوجائے گی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں