The news is by your side.

Advertisement

پاکستان نے آذربائیجان آرمینیا جنگ بندی کو مثبت پیش رفت قرار دے دیا

اسلام آباد: پاکستان نے آذربائیجان آرمینیا جنگ بندی کو مثبت پیش رفت قرار دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق دفتر خارجہ کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ پاکستان نے آذربائیجان اور آرمینیا جنگ بندی کو مثبت پیش رفت قرار دیا ہے۔

ترجمان نے کہا فریقین انسانیت دوست اقدامات پر متفق ہوئے ہیں جن کا احترام کیا جائے گا، تاہم دونوں ممالک کے درمیان دیرپا امن اقوام متحدہ کی قراردادوں پر مؤثر عمل درآمد پر منحصر ہے۔

ترجمان نے مزید کہا کہ اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عمل درآمد آذربائیجان سے آرمینین افواج کا مکمل انخلا ہے، پاکستان اس معاملے میں آذربائیجان کے شانہ بشانہ کھڑا رہےگا۔

آرمینیا اور آذربائیجان کے درمیان جنگ بندی پر اتفاق

یاد رہے کہ روس کی کوششوں کے بعد دو دن قبل مسلم اکثریتی آذربائیجان اور عیسائی اکثریتی ملک آرمینیا دو ہفتوں کی شدید جھڑپوں کے بعد مذاکرات کے لیے تیار ہو گئے تھے، روسی صدر ولادی میر پیوٹن نے دونوں ممالک کے وزرائے خارجہ کو مذاکرات کی دعوت دی تھی۔

گزشتہ روز روسی وزیر خارجہ نے کہا تھا کہ نگورنو کاراباخ میں آرمینیا اور آذربائیجان کے درمیان جنگ بندی پر اتفاق ہو گیا ہے، دونوں ممالک جنگ بندی معاہدے پر آج (گزشتہ روز) سے عمل کریں گے۔

دونوں ممالک کے درمیان جنگ بندی معاہدے پر مذاکرات روسی دارالحکومت میں ہوئے تھے، وزیر خارجہ روس کا کہنا تھا کہ تنازع کی جزیات طے کرنے کے لیے دونوں ممالک میں بات چیت جاری ہے۔

آذربائیجان نے آرمینیا سے آزاد کرائے گئے علاقوں‌ پر اپنا پرچم لہرا دیا

واضح رہے کہ تین دن قبل اسلام آباد میں آذربائیجان کے ڈپٹی ہیڈ آف مشنز سمیر گلئیوف نے کہا تھا کہ آرمینیا نے پہلے جنگ کا آغاز کیا جس کے بعد ہم نے جوابی کارروائی کی۔ انھوں نے پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ آرمینیا نے بیرون ممالک سے آئے دہشت گردوں کو مسلح کر کہ محاذ پر بھیجنا شروع کر دیا ہے، جب کہ آذربائیجان صرف اپنی سالمیت کا دفاع کر رہا ہے۔

ادھر دو دن قبل آذربائیجان نے متنازعہ ریجن نگورنوکاراباخ کے مزید علاقوں کا کنٹرول حاصل کر کے وہاں اپنا قومی پرچم لہرا دیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں