The news is by your side.

Advertisement

پاکستان بابری مسجد کے مقام پر مندر کی تعمیر کی مذمت کرتا ہے، ترجمان دفتر خارجہ

اسلام آباد: ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی کا کہنا ہے کہ پاکستان بابری مسجد کے مقام پر مندر کی تعمیر کی شدید مذمت کرتا ہے۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی کا کہنا ہے کہ بابری مسجد صدیوں تک موجود رہی، مسجد کے مقام پر مندر کی تعمیر نام نہاد بھارتی جمہوریت کے منہ پر بدنما دغ ہے۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی غلط فیصلے کی رو سے مندر کی تعمیر اکثریت کی طرف داری ہے، بھارت میں اقلیتوں کی عبادت گاہوں پر حملے کیے جاتے ہیں، 1992 میں بی جے پی کی جانب سے مسجد شہید کرنے کے مناظر آج بھی تازہ ہیں، تکلیف دہ مناظر آج بھی دنیا بھر کے مسلمانوں کے ذہنوں میں ہیں۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ او آئی سی کی جانب سے مسجد شہید کرنے کے خلاف متعدد قراردادیں موجود ہیں، بی جے پی بھارت کو ہندوتوا راشٹریہ بنانے پر گامزن ہے۔

عائشہ فاروقی نے کہا کہ آج کے دن ایودھیا میں ہونے والا واقعہ ہندوتوا کا عکاس ہے، کورونا وبا کے باوجود مندر کی تعمیر میں غیرمعمولی جلد بازی کی گئی۔

انہوں نے کہا کہ رواں سال بھی بھارت میں مسلمانوں کو نشانہ بنایا گیا، سٹیزن ایکٹ، سی اے اے اور این آر سی جیسے قوانین لائے گئے، بی جے پی مقبوضہ کشمیر میں آبادیاتی تبدیلی کی کوششوں میں ہے۔

دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ بھارت میں بڑھتی انتہا پسندی کی علامت بے نقاب ہورہی ہے، بھارت میں بڑھتی انتہا پسندی علاقائی امن کے لیے بھی خطرہ ہے، بھارت سے مطالبہ ہے مسلمانوں سمیت اقلیتوں کی حفاظت یقینی بنائیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں