نیٹو اجلاس میں افغان صدر کے بیان پر مایوسی ہوئی، دفتر خارجہ -
The news is by your side.

Advertisement

نیٹو اجلاس میں افغان صدر کے بیان پر مایوسی ہوئی، دفتر خارجہ

اسلام آباد: پاکستان دفتر خارجہ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ پاکستان کو افغان صدر کے ریمارکس پر مایوسی ہوئی ہے۔

پاکستان دفتر خارجہ نے افغان صدر اشرف غنی کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ نیٹو اجلاس کے دوران افغانستان کے پاکستان پر الزامات قابل افسوس ہیں،افغان قیادت پاکستان کے خلاف جارحانہ بیانات کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا ہے کہ افغان صدر کا بیان مایوس کن تھا مفروضوں پر مبنی بے بیناد الزامات سے گریز کرنا چاہیے، افغانستان اپنی پالیسیوں پر نظر ثانی نہیں کرتا جبکہ اپنی ناکامیوں پر پاکستان کو مورد الزام ٹھہرانا صیح نہیں ہے۔

جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان افغان قیادت سے بارڈر میجمنٹ کے تحت تعاون کرتے ہیں،افغان قیادت کی جانب سے دہشت گردی میں تعاون کی توقع کرتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک کے درمیان دہشت گردی کے خاتمے کے لیے تعاون وقت کی اہم ضرورت ہے، افغانستان میں امن پاکستان کے مفاد میں ہے۔

واضح رہے کہ امریکہ میں جاری نیٹو اجلاس میں افغان صدر اشرف غنی نے پاکستان پر الزام تراشی کرتے ہوئے کہا تھا کہ پاکستان کے سوا تمام پڑوسیوں کو اتحاد کے اچھے ثمرات مل رہے ہیں۔

افغان صدر نے کہا تھا کہ پاکستان اچھے اور برے دہشتگردوں میں امتیاز کی پالیسی برقرار رکھے ہوئے ہے، ہم معاملات طے کرنے کے قواعد پر پڑوسیوں سے متفق نہیں ہوسکتے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں