The news is by your side.

Advertisement

جرائم پیشہ افراد پر ملک کا پہلا ڈیٹا بینک، انٹر پول بھی مستفید ہو سکے گا

اسلام آباد: پاکستان نے آرٹیفیشل انٹیلی جنس کے میدان میں قدم رکھ دیا، صدر مملکت عارف علوی نے ملک کے پہلے ڈیٹا بینک کا افتتاح کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان نے آرٹیفیشل انٹیلی جنس فیلڈ میں قدم رکھتے ہوئے پہلا ایسا ڈیٹا بینک قایم کر لیا ہے جو ڈرگ مافیا اور منی لانڈرنگ میں ملوث افراد کی تفصیلات دے گا۔

اس سلسلے میں اسلام آباد میں ایک خصوصی تقریب منعقد ہوئی، جس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر مملکت برائے انسداد منشیات شہریار آفریدی نے کہا اس ڈیٹا بینک سے اے این ایف دنیا بھر سے منی لانڈرنگ اور منشیات سے متعلق جرائم میں ملوث افراد اور گروہوں کا ڈیٹا حاصل کر سکے گی۔

شہریار آفریدی کا کہنا تھا کہ منی لانڈرنگ سے وابستہ اور ڈرگ مافیا سے جڑے مقامی اور عالمی مجرموں کو اب جرائم سے پہلے ہی گرفتار کیا جا سکے گا، پاکستان اپنی فورسز کو جدید ٹیکنالوجی اور ٹولز سے مسلح کرے گا۔

یہ بھی پڑھیں:  صوبہ پنجاب میں 6 ماہ کے دوران جرائم میں اضافہ

انھوں نے کہا کہ جیسے ہی مطلوبہ فرد یا گروہ پاکستان میں لینڈ کرے گا، اس کے خلاف کارروائی ہوگی، انٹرپول اور دیگر عالمی ادارے بھی اس ڈیٹا بیس سے مستفید ہو سکیں گے۔

شہریار آفریدی نے مزید کہا کہ اب کوئی پاکستان کو ڈومور نہیں کہہ سکے گا، بلکہ پاکستان دنیا کو کہے گا کہ انھیں بہت کچھ کرنا ہے، پاکستان پہلے ہی بہت کر چکا۔

وزیر مملکت کا کہنا تھا کہ فیٹف سمیت دیگر عالمی تنظیمیں بھی آگاہ ہیں کہ پاکستان منی لانڈرنگ اور منشیات کے مجرمان کے خلاف اس حد تک گیا ہے جس کی مثال نہیں ملتی۔

انھوں نے کہا مجرموں کے ڈیٹا بینک کی معلومات سے ایف آئی اے سمیت دیگر ادارے ای ویزا سمیت دیگر ایشوز پر بھی مدد لے سکتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں