پاکستان نے حالیہ دہشت گردی کے تمام ثبوت افغان حکام کو فراہم کردیئے -
The news is by your side.

Advertisement

پاکستان نے حالیہ دہشت گردی کے تمام ثبوت افغان حکام کو فراہم کردیئے

اسلام آباد : حالیہ دہشت گردی کی منصوبہ بندی کہاں ہوئی، اہم ثبوت مل گئے اور پاکستان نے تمام ثبوت افغان حکام کو فراہم کردیئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان میں حالیہ دہشتگردی کی جڑیں افغانستان میں ہٰیں، پاکستان نے ہونے والے حالیہ دہشت گردی کے واقعات کے تمام ثبوت افغان حکام کو فراہم کردیئے ہیں، جس میں دہشت گردوں کے روابط کی ٹیلی فون کالز اور ڈیٹا بھی موجود ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ لاہور اور سیہون میں دہشت گردوں نے افغان سرحدی علاقوں سے کارروائیاں کیں جبکہ افغان سرحدی علاقوں میں دہشت گردوں کے خلاف کارروائیاں تیز کردی گئیں ہیں۔

فراہم کئے گئے ثبوتوں کے مطابق دہشت گردوں نے سرحد کے دونوں جانب اپنے تمام ذرائع استعمال کیے، کالعدم تحریک طالبان کے گروپس ملنے سے دہشت گردوں کو افرادی قوت ملی ہے۔


مزید پڑھیں : افغانستان میں چھپے دہشت گردوں کی فہرست افغان حکام کے حوالے


اس سے قبل پاکستان نے شر پسندی میں ملوث دہشت گردوں کے ناموں کی فہرست افغانستان کے حوالے بھی کی ہے، پاکستان نے دو ٹوک مطالبہ کیا ہے کہ دہشت گردوں کے خلاف فوری کارروائی کی جائے یا ہمارے حوالے کیے جائیں۔

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کے مطابق افغان سفارتخانے کے حکام کو جی ایچ کیو طلب کیا گیا، حکام کو افغانستان میں چھپے 76 دہشت گردوں کی فہرست دیتے ہوئے مطالبہ کیا گیا کہ دہشت گردوں کے خلاف فوری ایکشن لیا جائے یا پھر پاکستان کے حوالے کیا جائے۔

یاد رہے کہ درگاہ دھماکے کے بعد پاکستان نے افغانستان کے ساتھ تمام سرحدی راستے بند کردیئے ہیں۔

پاکستان نےافغانستان کے ساتھ سرحدبند کردی، چمن پر باب دوستی سیل ہے جبکہ تجارت کے ساتھ روزمرہ کی آمدورفت بھی معطل ہے، فاعی امور کے تجزیہ کار بریگیڈیئرشاہ محمود کا کہنا ہے کہ بھارت افغانستان میں سرگرم دہشت گردوں کی پشت پناہی کررہا ہے، طورخم بارڈر سمیت پاکستان نے افغانستان کے ساتھ تمام سرحدی راستے بندغیر معینہ مدت تک بند کردیئے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں