The news is by your side.

Advertisement

پاکستان نے پیرس کلب سے قرضے کی ادائیگی میں سہولت حاصل کر لی

اسلام آباد : پاکستان نے پیرس کلب سے قرضے کی ادائیگی میں سہولت حاصل کر لی،وزیر خارجہ شاہ محمودقریشی نے کہا کورونا کی وجہ سے کمزور معیشتوں کیلئےمالی سہولت ناگزیر بن چکی ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان نے پیرس کلب سے قرضے کی ادائیگی میں سہولت حاصل کر لی، وزیر خارجہ شاہ محمودقریشی نے کہا پاکستان کو سوداور قرضے کی ادائیگی فی الوقت نہیں کرنا پڑے گی، ترقی پذیر ممالک میں کورونا وائرس کے منفی اثرات کہیں زیادہ ہیں۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ کورونا کی وجہ سے کمزور معیشتوں کیلئےمالی سہولت ناگزیر بن چکی ہے، وزیراعظم عمران خان کے ویژن کے مطابق پاکستان نے بھرپور لابنگ کی۔

وزیر خارجہ نے مزید کہا عالمی سطح پرڈیٹ ریلیف کیلئےاسٹیک ہولڈرز کو قائل کیا گیا، وزیراعظم کے ویژن پر دنیا میں کام کرتے رہیں گے۔

مزید پڑھیں : قرض کی ادائیگی: پیرس کلب کا پاکستان کے لیے بڑا اعلان

یاد رہے گذشتہ روز پیرس کلب نے پاکستان کو قرضوں کی ادائیگی میں مہلت دینے کی منظوری دی تھی اور پاکستان کو باضابطہ طور پر ان ممالک میں شامل کر لیا گیا ہے جو قرض کی ادائیگی میں تاخیر کرسکتے ہیں۔

پیرس کلب کی جانب سے جاری اعلامیے میں کہا گیا تھا کہ یکم مئی سے 31 دسمبر 2020 تک پاکستان کا قرض موخر کر دیا گیا ہے، سہولت سے پاکستان کو قرضوں کی ادائیگی میں ریلیف مل سکےگا۔

اعلامیے کے مطابق کہ کرونا وائرس سے نمٹنے کے لیے پاکستان کا قرض موخر کیاگیا،جی 20 ممالک بھی قرضوں کو موخرکرنے کی توثیق کرچکے ہیں۔

خیال رہے جی 20 گروپ اور فرانسیسی وزارت خزانہ کی معاونت سے کام کرنے والے پیرس کلب نے رواں سال اپریل میں 77 غریب ترین ممالک کی جانب سے رواں سال قرض کی ادائیگیوں کو روکنے پر رضا مندی ظاہر کی تھی تاکہ وہ ممالک کرونا وائرس کے خلاف جنگ میں موثر کردار ادا کرسکیں۔

پیرس کلب کے مطابق تازہ ترین معاہدے کے تحت 12 ممالک کو قرضوں کی ادائیگی میں ریلیف مل سکے گا۔قرضوں میں ریلیف کے حوالے سے کل 30 ممالک نے درخواست کی تھی۔

یاد رہے کہ گزشتہ ماہ کے آغاز میں پاکستان نے جی 20 ممالک سے مزید کسی قسم کے مراعاتی قرض نہ لینے کی یقین دہانی کے ساتھ قرض کی ادائیگی میں ریلیف کی دخواست کی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں